کرکٹر احمد قریشی ورلڈ کپ کی منتخب ٹیم کی وجہ سے سلیکشن کمیٹی پر برہم

برمنگھم لائنز کہ سابق کپتان احمد قریشی کا راولپنڈی میں میڈیا نمائندوں سے خصوصی گفتگو میں کہنا تھا کہ ورلڈ کپ کے لیے اس طرح کی سلیکشن سمجھ سے بالاتر ہے،ورلڈ کپ کہ لیے اس طرح کی سلیکشن پہلے کبھی نہیں دیکھی ان کا مزید کہنا تھا کہ ورلڈکپ میں بری کارکردگی کی زمہ داری کوئی بھی خود پر نھیں لے گا

احمد قریشی نے کہا کہ جن کھلاڑیوں کی جگہ ٹیم میں نہیں بنتی وہ ٹیم کا حصہ ھیں اور جن کو ٹیم میں نہیں ہونا چاہیے وہ ٹیم میں شامل ہیں انہوں نے مزید کہا کہ شعیب ملک کی ٹیم کو ضرورت ہے انھیں شامل کرنا چاہیے تھا کیوں کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کا مڈل آرڈر زوال کا شکار ہے

انہوں نے مزید کہا کہ اگر ٹیم اچھا پرفام نہ کر سکی تو سارا ملبہ محمد وسیم پر گرے گا اور اُنہیں “قربانی کا بکرا” بنا دیا جائے گا کیوں کے دونوں کوچز پہلے ہی مستعفی ہو چکے ہیں کپتان بابر اعظم سے متعلق اُن کا کہنا تھا کہ ایسے ہالات میں انہیں سامنے آکر اپنی رائے کا اظہار کرنا چاہیے

ایک صحافی کہ سوال پر احمد قریشی نے کہا کہ سب جانتے ہیں کہ اس سلیکشن کہ پیچھے کون ہے آپ میرے کندھے پر بندوق رکھ کہ مت چلایں گفتگو کہ آخر میں انہوں نے اس سال کرکٹ میں واپسی کا اشارہ دیتے ہوئے کہا کہ فٹنس پر کام کر رہا ہوں جلد ایکشن میں نذر آؤں گا