پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پہلا ٹی ٹوئنٹی بارش کے باعث بے نتیجہ ختم

انگلینڈ اور پاکستان کے درمیان سیریز کا پہلا ٹی ٹوئنٹی میچ بارش سے متاثر ہوا اور امپائرز نے میچ بغیر نتیجہ ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

بارش سے قبل انگلینڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 17.1 اوورز میں 6 وکٹوں پر 131 رنز بنا لیے تھے۔

اولڈ ٹریفورڈ میں سیریز کے پہلے میچ میں پاکستان کے کپتان بابر اعظم نے ٹاس جیت کر میزبان انگلینڈ کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی اور عماد وسیم نے شروع میں ہی وکٹ لے کر عمدہ آغاز کیا۔

انگلینڈ کی جانب سے جونی بیئراسٹو اور بینٹن نے اوپننگ کی تاہم جارح مزاج بیئراسٹو کو عماد وسیم نے اپنی ہی گیند پر کیچ لے کر آؤٹ کردیا۔

پاکستان کو دوسری وکٹ کے لیے بڑی کوشش کرنا پڑی اور ڈیوڈ ملان کو محمد حفیظ اور شاداب خان نے عمدہ فیلڈنگ کے ذریعے رن آؤٹ کردیا لیکن انگلینڈ کا اسکور 74 رنز تک پہنچ گیا تھا۔

ڈیوڈ ملان آوٹ ہونے والے دوسرے بلے باز تھے جنہوں نے 23 رنز بنائے، جس کے بعد انگلینڈ کے کپتان آئن مورگن بیٹنگ کے لیے آئے اور بینٹن کے ساتھ مل کر اسکور کو 109 رنز تک پہنچایا۔

بینٹن نے 4 چوکوں اور 5 چھکوں کی مدد سے 71 رنز کی بہترین اننگز کھیلی، 118 کے اسکور پر مورگن 14 رنز بنا کر افتخار احمد کو وکٹ دے گئے۔

وکٹ کیپر محمد رضوان نے وکٹوں کے پیچھے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے یکے بعد دیگرے معین علی کو کیچ اور گریگوری کو اسٹمپ آؤٹ کردیا اور انگلینڈ 123 رنز پر 6 وکٹوں سے محروم ہوگیا۔

معین علی کو شاداب خان نے آؤٹ کرکے ٹی ٹوئنٹی کیریئر میں وکٹوں کی نصف سنچری بھی مکمل کی۔

انگلینڈ نے 17ویں اوور کی پہلی گیند پر 6 وکٹوں پر 131 رنز بنا لیے تھے کہ بارش کے باعث کھیل روک دیا گیا۔

بعد ازاں پاکستان کو جیت کے لیے 5 اوورز میں 56 رنز کا ہدف دے دیا گیا لیکن بارش کے باعث دوبارہ کھیل ممکن نہ ہوسکا اور امپائرز نے میچ بغیر نتیجہ ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

موسم ابر آلود ہونے کی وجہ سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا تھا کہ شاید بارش کے باعث کھیل متاثر ہوگا اور بدقسمتی سے خدشات درست ثابت ہوئے اور ایک ایسے موقع پر بارش نے مداخلت کی جب پاکستان کے باؤلرز نے اچھی کارکردگی دکھاتے ہوئے انگلینڈ کے 6 وکٹیں حاصل کرلی تھیں۔

پہلے میچ میں پاکستان کی جانب سے عماد وسیم اور شاداب خان نے 2،2 اور افتخار احمد نے ایک وکٹ حاصل کی۔

خیال رہے کہ پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان ٹی ٹوئنٹی سیریز کا دوسرا میچ 30 اگست اور تیسرا میچ یکم ستمبر کو کھیلا جائے گا۔

سیریز کے بقیہ دونوں میچز بھی مانچسٹر کے اولڈ ٹریفورڈ گراؤنڈ میں کھیلے جائیں گے۔

دونوں ٹیموں کے درمیان ٹی ٹوئنٹی میچز کا ریکارڈ دیکھا جائے تو پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان اب تک 5 میچ کھیلے جاچکے ہیں، جن میں 3 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں پاکستان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ایک میچ میں کامیابی ملی اور ایک برابر ہوا تھا۔

میچ سے قبل قومی اسکواڈ میں وکٹ کیپر کی شمولیت سے متعلق تبصرے جاری تھے کہ ٹیسٹ سیریز میں شان دار کارکردگی دکھانے والے محمد رضوان، سابق کپتان سرفراز احمد یا حال ہی میں ٹیم میں جگہ بنانے والے نوجوان وکٹ کیپر حیدر علی میں سے کس کو ٹیم میں شامل کیا جائے گا۔

تاہم تمام قیاس آرائیوں نے دم توڑدیا اور محمد رضوان ٹیم کا حصہ بن گئے۔

سیریز کے پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ کے لیے دونوں ٹیمیں ان کھلاڑیوں پر مشتمل تھیں۔

پاکستانی اسکواڈ: بابر اعظم (کپتان)، فخر زمان، محمد حفیظ، شعیب ملک، محمد رضوان (وکٹ کیپر)، افتخار احمد، شاداب خان، عماد وسیم، محمد عامر، شاہین شاہ آفریدی، حارث رؤف۔

انگلینڈ اسکواڈ: جونی بیرسٹو (وکٹ کیپر)، ٹام بینٹن، ڈیوڈ میلان، ایون مورگن (کپتان)، سیم بلنگز، معین علی، لوئس گریگری، ٹام کرین، عادل رشید، کرس جورڈن، ثاقب محمود۔