آئی پی ایل انٹرنیشنل کرکٹ کے وجود کیلئے خطرہ بننے لگی

انگلینڈ کرکٹ بورڈ کے ڈائریکٹر ایشلے جائلز نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اگر انگلش کرکٹرز کو انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کھیلنے کی اجازت نہیں دی گئی تو انگلینڈ اپنے بہترین کھلاڑیوں سے محروم ہوسکتاہے۔

ایک انٹرویو میں 48 سالہ ایشلے جائلز کا کہنا تھا کہ فی الحال ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ہمارے کرکٹرز انگلینڈ کی جانب سے کھیلنے میں خوشی محسوس کرتے ہیں لیکن ہمیں سمجھنا ہوگا کہ مستقبل میں ایسا بھی ممکن ہے کہ ہمارے کھلاڑی آئی پی ایل کو قومی ٹیم پر فوقیت دیں گے۔

خیال رہے کہ آئی پی ایل دنیا کی سب سے مہنگی ٹی ٹونٹی لیگ ہے جس میں انگلینڈ کے 11 کرکٹرز مختلف فرنچائز سے کھیلتے ہیں۔ ان کھلاڑیوں میں بین سٹوکس، این مورگن، جوفرا آرچر، جوز بٹلر، معین علی اور کرس ووکس سمیت دیگر شامل ہیں۔انگلش کرکٹ بورڈ کی جانب سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ آئی پی ایل میں مصروفیت کے باعث اس کے اکثر کھلاڑی نیوزی لینڈ کے خلاف جون میں شروع ہونے والی ٹیسٹ سریز نہیں کھیل پائیں گے۔