لاکھوں ڈالرز خرچ ہونے کے باوجود بھی “فیفا گول پروجیکٹ” زبوں حالی کا شکار

کراچی: دو ہزار بارہ میں کراچی کی ساحلی پٹی ہاکس بے پر مکمل ہونے والا منصوبہ “فیفا گول پروجیکٹ” نو سال بعد بھی مکمل نہ ہوسکا ہے۔

پاکستان میں فٹ بال کا کھیل کئی سالوں سے زبوں حالی کا شکار ہے، کھبی پاکستان فٹ فیڈریشن میں متنازعہ انتخابات کے باعث فیفا کی جانب سے پابندی لگادی جاتی ہے تو کھبی پاکستان فٹ فیڈریشن میں من پسند افراد کی تعیناتی کے باعث اسے عدالت میں چیلنج کردیا جاتا ہے۔

مگر آج جو رپورٹ پیش کی جارہی ہے وہ پاکستان میں فٹ بال کی زبوں حالی کی ایک مثال ہے، اور وہ ہے فیفا گول پروجیکٹ۔

کراچی کی ساحلی پٹی ہاکس بے پر فیفا گول پروجیکٹ میں ہر طرف تباہی کے مناظر ہیں، اس منصوبے کو دو ہزاربارہ میں مکمل ہونا تھا، تاہم نوسال بعد بھی یہ نامکمل ہے۔اس منصوبہ کیلئے فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا سےفٹ بال فیڈریشن نےلاکھوں ڈالرز وصول کئے، اس منصوبےکی خوفناک تباہی کی اہم ترین بات یہ ہےکہ فیفا کو کاغذات میں اس پروجیکٹ کومکمل دکھایا گیا ہے

رہائشی کمرے، کانفرنس روم، ڈائنگ ہال، کچن سمیت پلے گراونڈ ابھی تک نامکمل حالت میں موجود ہے جبکہ پاکستان فٹبال فیڈریشن کی نارملائزیشن کمیٹی نے اس کارستانی کا سارا مبلہ پچھلی فیڈریشن کی پر ڈال رکھا ہے، کرپشن کی ایسی داستانیں پاکستان فٹ بال کو اندھیروں میں دھکیل چکی ہیں۔