شعیب اختر طلبی کے نوٹس کے باوجود ایف آئی اے میں پیش نہ ہوئے ، نوٹس کو ہی چیلنج کر دیا، انتہائی حیرت انگیز موقف

لاہور قومی کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ بالر شعیب اختر طلبی کے نوٹس کے باوجود ایف آئی اے میں پیش نہ ہوئے جبکہ شعیب اختر نے اپنے وکیل کے ذریعے ایف آئی اے کے نوٹس کو چیلنج کر دیا۔کرکٹر شعیب اختر کو بورڈ کے قانونی مشیر تفصل رضوی کی درخواست پر طلب کیا گیا تھا۔ تفضل رضوی کی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھاکہ شعیب اختر نے میں میری شہرت کو نقصان پہنچایا۔ایف آئی اے کی تحقیقاتی ٹیم صبح دس بجے سے ایک بجے تک انتظار کرتے رہی تاہم شعیب اختر پیش نہ ہوئے ۔ ایف آئی

اے کی جانب سے شعیب اختر کو ایک اور طلبی کا نوٹس بھجوانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ دوسری جانب شعیب اختر نے ایف آئی اے کے طلبہ کے نوٹس کو چیلنج کردیا ۔شعیب اختر نے اپنے وکیل ابوذر سلمان خان نیازی کی وساطت سے ڈی جی ایف آئی اے کو اپیل کردی جس میں موقف اپنایا گیا ہے کہ طلبی کا نوٹس غیر قانونی ہے۔ایف آئی اے نے طلب کرنے سے قبل قواعد و ضوابط پورے نہیں کیے ۔ایف آئی اے کے نوٹس میں طلب کرنے کی وجوہات نہیں بتائی گئیں ۔درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ قومی کھلاڑی اور ملک کے لیے بہترین فرائض سر انجام دئیے ، انکوائری افسر نے شعیب اختر کا نوٹس جان بوجھ کر پبلک کیا ۔ استدعا ہے کہ طلبی کا نوٹس کالعدم قرار دیا جائے اوراپیل کے حتمی فیصلہ تک انکوائری روکنے کا حکم دیا جائے۔