ایک اور انٹرنیشنل کھلاڑی نے یوایس کرکٹ کو مستقبل بنا لیا

ایک اور انٹرنیشنل کرکٹر نے یوایس کرکٹ کو اپنا مستقبل بنا لیا، سمیع اسلم اور کورے اینڈرسن کے بعد سری لنکن بیٹسمین شیہان جے سوریا نے اپنا کیریئر امریکی کرکٹ سے وابسطہ کر لیا۔29سالہ جے سوریا نے سری لنکن کرکٹ کو خیرباد کہہ کر فیملی کے ہمراہ امریکا میں مستقل رہائش اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

2015میں انٹرنیشنل ڈیبیو کرنے والے جے سوریاں 12 ون ڈے اور 18 ٹی ٹوئنٹی میں سری لنکا کی نمائندگی کر چکے ہیں اور انہوں نے اپنا آخری انٹرنیشنل میچ 2020 میں ویسٹ انڈیز کے خلاف پالے کیلے میں کھیلا تھا۔جے سوریا لنکا پریمیر لیگ کا بھی حصہ تھے وہ رنرز اپ ٹیم گال گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کرتے ہوئے 10 مچیز میں 119 رنز ہی بنا سکے تھے۔

امریکا کو 2019 میں ون ڈے انٹرنیشنل کا اسٹیٹس ملا ہے جس کے بعد اس نے دنیا بھر سے بین الاقوامی کرکٹ کا تجربہ رکھنے والے کھلاڑیوں کو بھرتی کرنا شروع کیا ہے۔کسی بھی ملک سے آنے والے انٹرنیشنل کرکٹر کو تین سال تک امریکا میں رہائش کے ساتھ کرکٹ کھیلنا ہوگی جس کے بعد انہیں امریکا کی ملکی ٹیم کی نمائندگی کا حق ہوگا۔

ٹیم میں منتخب نہ کیے جانے پر دلبرداشتہ سمیع اسلم کی طرح نیوزی لینڈ کے جارح مزاج بیٹسمین کورے اینڈرسن نے بھی ملکی کرکٹ کو خیرباد کہہ چکے ہیں۔قومی کرکٹر سمیع اسلم نے پاکستان کرکٹ بورڈ سے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے مستقل طور پر امریکا منتقل ہوگئے۔24 سالہ پاکستانی کرکٹر سمیع اسلم کرکٹ بورڈ کی سلیکشن پالیسیوں سے سخت نالاں تھے، کیونکہ انہیں اچھی کارکردگی کے باوجود دورہ نیوزی لینڈ اور برطانیہ کےلیے اسکورڈ میں شامل نہیں کیا گیا۔