پاکستان باکسنگ فیڈریشن کو سالانہ گرانٹ سے محروم کر دیا گیا

اسلام آباد: (ویب ڈیسک) گزشتہ دنوں پاکستان سپورٹس بورڈ نے 16 سپورٹس فیڈریشنز کو گرانٹ جاری کی لیکن اس میں پاکستان باکسنگ فیڈریشن کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا ہے۔

جن سپورٹس کو گرانٹس جاری کی گئیں ان میں پاکستان والی بال فیڈریشن کو 3 ملین، اتھلیٹکس فیڈریشن، بلیرڈ اینڈ سنوکر، کبڈی اور رائفل ایسوسی ایشن کو 2، 2 ملین، باڈی بلڈنگ، سکواش، ٹینس، ہاکی، جوڈو اور بیڈمنٹن کو ڈیڑھ، ڈیڑھ ملین جبکہ کراٹے، نیٹ بال، تائیکوانڈو، ویٹ لفٹنگ، ریسلنگ فیڈریشن کو ایک، ایک ملین کی رقوم ریلیز کی گئی ہے۔

اس حوالے سے سرکاری میڈیا سے بات کرتے ہوئے پاکستان باکسنگ فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل کرنل ریٹائرڈ ناصر اعجاز تنگ نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے سالانہ گرانٹ سے محروم کرنا ملک میں باکسنگ کھیل کے ساتھ ناانصافی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں باکسنگ کا بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے، اس کو بروئے کار لانے کے لئے پاکستان باکسنگ فیڈریشن کئی سالوں سے اپنی مدد آپ کے تحت اقدامات کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے باکسنگ فیڈریشن کو سالانہ گرانٹ جاری نہ کرکے باکسنگ کھیل کی حق تلفی کی ہے۔ ملکی تاریخ میں پاکستان نے باکسنگ کے کھیل میں 1948ء سے آج تک 223 میڈلز حاصل کر رکھے ہیں۔ ان میں اولمپک گیمز، عالمی مقابلے، کامن ویلتھ گیمز، ایشین گیمز اور ساﺅتھ ایشین گیمز کے علاوہ بے شمار بین الاقوامی ایونٹس کے میڈلز شامل ہیں۔

انہوں نے وزیر اعظم عمران خان اور وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا سے اپیل کی ہے کہ حکومت دیگر سپورٹس فیڈریشنز کی طرح پاکستان باکسنگ فیڈریشن کو بھی فنڈز جاری کرے تاکہ بین الاقوامی سطح پر ملک کا نام روشن کرنے والے کھلاڑیوں میں پائی جانے والی بے چینی دور ہوسکے۔