سال دوہزار بیس کا آخری سورج گرہن، کیا پاکستان میں دیکھا جاسکے گا؟

رواں سال کا دوسرا اور آخری سورج گرہن آج ہوگا، سورج گرہن پاکستان میں دیکھا جاسکے گا یا نہیں؟ شعبہ اسپیس سائنس جامعہ کراچی نے واضح کردیا۔ شعبہ اسپیس سائنس جامعہ کراچی کے ڈائریکٹرجاوید اقبال نے بتایا کہ سال دوہزار بیس کا دوسرا اور آخری سورج گرہن آج ہوگا، تاہم یہ کراچی سمیت پاکستان میں کہیں نہیں دیکھا جائےگا۔

ڈائریکٹر جاوید اقبال نے بتایا کہ سورج گرہن جنوبی ، شمالی امریکا، آسٹریلیا کے ممالک میں دیکھا جاسکےگا، محکمہ موسمیات کے مطابق سورج گرہن کا آغاز پاکستانی وقت کے مطابق شام 6 بج کر 34 منٹ پر اور اس کا اختتام رات 11 بج کر 53 منٹ پر ہوگا۔واضح رہے کہ پاکستان میں رواں سال اکیس جون کو سورج گرہن ہوا تھا، جسے رنگ آف فائرکا نام دیاگیا تھا، اس سورج گرہن کو گذشتہ دس سال کا سب سے طاقت ور سورج گرہن بھی قرار دیا گیا تھا۔

سورج گرہن کے نقصانات
سورج گرہن کا سب خطرہ آنکھوں کو ہوتا ہے کیونکہ گرہن لگنے کے دوران سورج سےانفراریڈ، الٹراوائیلٹ نامی سرخ شعاعیں نکلتی ہیں جو انسانی آنکھ کو بہت زیادہ متاثر کرتی اور اس سے قرنیہ ہمیشہ کے لیے متاثر ہوتا ہے۔سورج گرہن کے دوران شعاعیں آپ کے قرنیہ اور ریٹنا کو جلا سکتی یا بھاپ پیدا کرسکتی ہیں جس سے انکھ کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔