دنیا کا پہلا ’اینٹی بیکٹیریئل‘ اسمارٹ فون اگلے سال پیش کیا جائے گا

لندن: دنیا کا پہلا جراثیم کُش اسمارٹ فون اب فروخت کے لیے پیش کردیا گیا ہے۔ اس کے متعلق دعویٰ کیا جارہا ہےیہ 24 گھنٹے میں 99.9 فیصد جراثیم ختم کردیتا ہے۔اس فون کو کیٹ ایس 42 کا نام دیا گیا ہے جو اگلے سال کی پہلی سہ ماہی میں فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا۔ اسے بُل اٹ نامی گروپ نامی کمپنی نے تیار کیا ہے جو مختلف کاموں کے لیے بہت ٹھوس اور مضبوط اشیا تیار کرتی ہیں جن میں کیٹ مصنوعات بھی شامل ہیں۔

اس فون کی قیمت 229 برطانوی پاؤنڈ کے برابر رکھی گئی ہے اور اس کا جدید ترین ماڈل بایو ماسٹر اینٹی مائیکروبیئل ٹیکنالوجی سے لیس ہوگا جس میں سلور آئن شامل ہوں گے ۔ چاندی کے آئن کی بدولت یہ فون ازخود جراثیم سے پاک ہوتا رہے گا یوں 24 گھنٹے میں اس پر سے جراثیم کی 99 فیصد سے زائد مقدار تلف ہوجائے گی۔ لیکن اب بھی یہ دنیا کو شدید تباہی تک پہنچانے والے کورونا وائرس کو ختم نہیں کرسکتا۔کمپنی کی پریس ریلیز کے مطابق ان کا نیا اسمارٹ فون صرف 15 منٹ میں 80 فیصد جراثیم کا خاتمہ کرتا ہے باقی جراثیم دھیرے دھیرے 24 گھنٹے میں غائب ہوجاتے ہیں۔ اچھی بات یہ ہے کہ اسمارٹ فون مکمل طور پر واٹر پروف ہے اور اسے صابن اور بلیچ سے بھی دھویا جاسکتا ہے۔ اس طرح فون کو سینٹی ٹائزر سے دھوکر کورونا وائرس کے خلاف بھی پاک کیا جاسکتا ہے۔

واضح رہے کہ جراثٰیم کے ماہربھی اسمارٹ فون کو دن میں دو مرتبہ جراثیم کش بنانے کا مشورہ دیتے ہیں کیونکہ یہ بہت سے انتہائی مضر خردنامیوں کی آماجگاہ بن سکتا ہے۔ کیٹ ایس 42 کے دیگر خواص میں گوریلا گلاس، ڈیڑھ میٹر گہرائی میں 15 منٹ تک واٹرپروف، ایچ ڈی ڈسپلے، اینڈروئڈ 10 اور مزید اپ گریڈییشن، 32 جی بی روم اور پانچ میگا پکسل کیمرہ بھی شامل ہے۔