نواز شریف جس کو وزارت عظمیٰ کیلئے نامزد کرینگے ، پارٹی اسکی ہی پیروی کریگی ، جنرل (ر )عبد القیوم

جب ڈاکٹر اجازت دینگے ، نواز شریف وطن واپس آجائیں گے ، اصل ووٹ ہی نواز شریف کا ہے
شہبا ز شریف محتنی آدمی ہیں، مریم نواز ، شاہد خاقان عباسی سمیت کا اپنا اپنا مقام ہے
عمران خان کی تقاریر اچھی ہیں مگر جو دعوے کئے ان پر عمل کرنا مشکل ہے ، سچی بات میں گفتگو
اسلام آباد (روزنیوزرپورٹ)مسلم لیگ ن کے رہنما جنرل (ر)عبد القیوم نے پروگرام ”سچی بات “ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے نواز شریف یہاں قید یں تھے، اور صحت بھی خراب تھی، جب وہ باہر گئے توکرنا وائرس کا حملہ جاری تھا، وہ علاج کیلئے منتظر ہیں، نواز شریف اتنی بڑی پارٹی کے سربراہ ہیں، وہ ہلے پاکستان آئے تھے اور اگر اب بھی ڈاکٹر اجازت دے گا تو وہ واپس آئیں گے ، بد قسمتی سے حکومت سمجھتی ہے کہ جو بیمار ہو وہ بستر پر لیٹا نظر آئے ، باہر پھرنا بھی علاج کا حصہ ہے ، واکر کرنا بھی صحت کے لئے ضروری ہے ، جب ڈاکٹر اجازت نہ دے مریض سفر نہیں کر سکتا، عدالت جو کہہ رہی ہے نواز شریف اور ان کا خاندان کوئی نہ کوئی جواب تو ضرور دے گا، انہوں نے کہا کہ نواز ، شہباز آئی تو لوگ اکھٹے ہونگے سب اپنے لیول کے لیڈر ہیں، پارٹی کو کون لیڈ کرے گا اس کا فیصلہ پارٹی کرے گی ، نواز شریف کا ووٹ ہے ، ان پر جو الزامات لگے ان کی دنیا میں مثال نہیںملتی ، مگر پھر بھی ان کی مقبولیت قائم ہے ، شہباز شریف ، شاہد خاقان عباسی سب کا اپنا اپنا مقام ہے ، نواز شریف جس کو وزیر اعظم کیلئے نامزد کریں گے پارٹی اس کو ہی فالو کرے گی ، شہباز شریف نہایت محتنی ہیں، اس سے قبل پنجاب میں پرویز الٰہی نے بھی اچھے کام کیے ، عمران خان کی تقاریر سن لیں ، اچھی باتیں کیں لیکن ان پر عملدرآمد کرنا نہایت مشکل ہے ، چیلنجز کا سامنا کرنا مشکل ہوتا ہے ۔
عبد القیوم