friend daughter sucking sideways big rod.videos porno
desi porn
pornoxxx

پولیس میں موجود کالی بھیڑوں کے شکار کے لئے ‘بلیک کمپنی’ سیل قائم کردیا گیا

کراچی: ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے پولیس کے اعلیٰ افسران کو خبردار کیا ہے کہ جرم کی سرپرستی یا گٹھ جوڑ والے افسر کو کسی صورت نہیں بخشا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق یہ دو ٹوک پیغام کراچی پولیس چیف نے ایس ایچ او مبینہ ٹاون فیض الحسن اور ایس ایچ او الفلاح کو معطل کرنے کے بعد دیا۔

رپورٹ کے مطابق کراچی پولیس میں کالی بھیڑوں کیلئے بلیک کمپنی کے نام سے سیل قائم کیا جاچکا ہے، جس میں جرائم کی سرپرستی کرنے اور علاقے میں جرائم کو روکنے میں ناکامی پر متعلقہ ایس ایچ او کو بلیک کمپنی میں ڈال دیا جاتا ہے۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی نے رات گئے ایکشن لیا اور ایس ایچ او مبینہ ٹاون فیض الحسن اور ایس ایچ او الفلاح معطل کیا، غلام نبی میمن نے بتایا کہ دونوں ایس ایچ اوزکےخلاف خفیہ انکوائری جاری تھی، رپورٹ کے مطابق علاقے میں منظم جرائم جاری تھے جس پر ان دونوں افسران کو معطل کیا گیا، دونوں اب بلیک کمپنی کے لیے کام کریں گے۔

کراچی پولیس چیف کا کہنا تھا کہ جرم کی سرپرستی یا گٹھ جوڑ والے افسر کو نہیں بخشاجائےگا۔ یاد رہے کہ اس سے قبل 24مارچ کو ایس ایچ او ابراہیم حیدری کو بلیک کمپنی بھیجا گیا تھا، ایس ایچ او راجہ ذوالفقار حیدر اور چار اہلکار جرائم میں ملوث تھے۔

spanish flamenca dancer rides black cock.sex aunty
https://www.motphim.cc/
prmovies teen dildo wet blonde stunner does it on the hood of car.