پسند کی شادی سے انکارپربیٹے نے باپ کو تیزدھارآلے سے قتل کردیا

کراچی: خون سفید ہونے کی ایک اورمثال سامنے آگئی جہاں بیٹے نے اپنی محبت کے حصول میں حائل رکاوٹ اپنے ہی باپ کو بے دردی سے قتل کردیا۔

گزشتہ روزکراچی کے علاقے کلفٹن میں شیریں جناح کالونی میں معمرشخص کی لاش ملی تھی جس کی شناخت 80 سالہ شہزاد گل ولد خداداد کے نام سے کی گئی تھی، شہزاد گل کو تیز دھار آلے کے وارسے ہلاک کیا گیا تھا۔

پولیس نے ابتدائی طورپرمقتول کے بیٹے یاسر کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ الزام نمبر 539/2020 بجرم دفعہ 302/34 کے تحت درج کیا لیکن جب تحقیقات کا آغاز کیا گیا تو معلوم ہوا کہ جائے وقوعہ پر یاسر اور اس کے باپ کے علاوہ کسی تیسرے کی موجودگی کے شواہد نہیں ملے جبکہ دیگر ثبوت اورشواہد بھی مقتول کے بیٹے کی جانب اٹھنے لگے جس پر پولیس نے جب یاسر سے سختی سے پوچھ گچھ کی تو اس نے فوری طور پر قتل کا اعتراف کرلیا۔

پولیس حکام کے مطابق یاسر نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ وہ پسند کی شادی کرنا چاہتا تھا اوراس سلسلے میں کافی عرصے سے وہ اپنے والد کو منانے کی کوششیں کررہا تھا، اس مسئلے پرپہلے بھی باپ بیٹے کے درمیان کافی تلخ کلامی اور جھگڑا تک ہوچکا ہے ، وقوعہ کے وقت بھی ان دونوں کے درمیان تکرارہورہی تھی کہ طیش میں آکر اس نے اپنے باپ کو ہی قتل کردیا۔