اشرف غنی اور عبد اللہ عبد اللہ کے مابین مسئلہ امریکی دبائو کے بعد حل ہوا

بھارت نے افغانستان کی آرمی ، پولیس اور بیورو کریسی کو تربیت دی ہوئی ہے
امریکہ چاہے تو طالبان اور افغان حکومت کے مذاکرات کامیاب ہو سکتے ہی ، مگر وہ نہیں چاہتا
افغانستان کے اداروں میں بھارت کا بہت زیادہ اثر موجود ہے ،سچی بات میں گفتگو
اسلام آباد (روزنیوزرپورٹ)اشرف غنی اور عبد اللہ عبد اللہ کے مابین مسئلہ امریکی دبائو کے بعد حل ہوا ،بھارت نے افغانستان کی آرمی ، پولیس اور بیورو کریسی کو تربیت دی ہوئی ہے ،امریکہ چاہے تو طالبان اور افغان حکومت کے مذاکرات کامیاب ہو سکتے ہی ، مگر وہ نہیں چاہتا ،افغانستان کے اداروں میں بھارت کا بہت زیادہ اثر موجود ہے ،ان خیالات کا اظہار جنرل (ر)امجد شعیب نے روزنیوز کے پروگرام ” سچی بات ” میں ایس کے نیازی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ جب اشرف غنی اور عبد اللہ عبد اللہ دونوں نے علیحدہ حلف اٹھا لئے تھے تو اس وقت امریکہ نے دھمکی دی بعد ازاں یہ مسئلہ حل ہو گیا، اسی طرح وہ خطے میں امن نہیں چاہتا ، بھارت کو بھی اس کی شہہ حاصل ہے ، اسی وجہ سے بھارت نے خطے کا امن تہہ و بالا کر رکھا ہے ۔