ویڈیو: وزیراعظم تقریب سے خطاب کے دوران جذباتی کیوں ہوگئے ؟

اسلام آباد میں عشرہ رحمت اللعالمین ﷺ کی مرکزی تقریب سے خطاب کے دوران وزیراعظم عمران خان ایک موقع پر جذباتی بھی ہوگئے۔ خطاب کے دوران وزیراعظم عمران خان نے بتایا کہ انہیں نوجوانوں سے متعلق کیوں خوف لاحق ہے۔

وزیراعظم عمران خان کاکہنا تھا کہ آج میں اپنی قوم کے نوجوان سے بات کرنا چاہتا ہوں، کیونکہ ہماری اکثریت نوجوانوں کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جس طرح ہمارے نوجوانوں پر پریشر ہے اور جس طرح کے میڈیا اور سوشل میڈیا پر حالات ہیں، مجھے بڑا خوف ہے اس لیے میں ایک مختلف قسم کی بات کروں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ میں اپنی زندگی سے شروع کروں گا، میں ہمیشہ ایسا نہیں تھا جس جگہ آج ہوں، میں نے بہت سوچا کہ میں اس پر بات کروں یا نہ کروں لیکن پھر مجھے اہلیہ بشریٰ بیگم نے کہا کہ ضرور اس پہ بات کریں۔ انہوں نے کہا کہ میرا یہ جو سفر اللہ کی طرف ہواہے، میں صرف اس پہ تھوڑی بات کرنا چاہتا ہوں، ہم جب چھوٹے تھے تو والدہ نے سونے سے قبل دعا سکھائی تھی کہ دعا کرو کہ اللہ مجھے سیدھے راستے پہ لگا، تو ہم بہن بھائی یہی دعا مانگا کرتے تھے، لیکن جب میں ایچی سن کالج گیا تو ہمارے ہیرو اور رول ماڈل کچھ اور تھے، جو ہمیں سیدھا راستا بتایا گیا اور جو ہمارے رول ماڈل تھے اس میں زمین آسمان کا فرق تھا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ رول ماڈل فلم ایکٹرز، پاپ اسٹارز، اسپورٹس مین اور گلیمرس لوگ تھے اور ان لوگوں کی زندگیاں ہمیں بتائے گئے سیدھے راستے سے بالکل الگ تھیں، بعد ازاں کئی سالوں بعد جب میں خود بھی مشہور ہوگیا اور میری ان لوگوں سے ملاقاتیں ہوئی اور انہیں میں نے قریب سے دیکھا تو مجھے سمجھ آنے لگی کہ ان کا راستہ تباہی کا تھا اور میں نے کئی لوگوں کو تباہ ہوتے دیکھا۔