منتخب نمائندے کے حلف کا معاملہ، آرڈیننس کیخلاف ن لیگ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد ہائی کورٹ نے 60 روزمیں منتخب نمائندے کے حلف لازمی قرار دینے کے صدارتی آرڈیننس کے خلاف ن لیگ کی درخواست قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا۔

دوران سماعت چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے کہ عدالت کو نہیں پارلیمنٹ کو اپنے اختیارات استعمال کرنے چاہئیں، عدالت کو اس قسم کے سیاسی معاملے میں کیوں پڑنا چاہیے؟

ابتدائی دلائل کے بعد عدالت نے 60 روزمیں منتخب نمائندے کا حلف لازمی قرار دینے کےخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ عدالت نے کہا کہ کوئی منتخب ہونے کے بعد حلف نہیں لیتا تو عوام اس سے متاثر ہوتے ہیں، اپوزیشن کے پاس سینیٹ میں اکثریت موجود ہے تو وہ اسی فورم پر جائے۔