ملک میں صدارتی نظام کے نفاذ کیلئے دائر درخواستیں ناقابل سماعت قرار

سپریم کورٹ نے ملک میں صدارتی نظام کے نفاذ کے لیے دائر درخواستیں ناقابل سماعت قرار دے دیں۔ پاکستان میں صدارتی نظام کے نفاذ کے لیے دائر درخواستوں پر سپریم کورٹ نے مؤقف اپنایا ہے کہ صدارتی نظام کے لیے دائر درخواستوں میں اٹھایا گیا نقطہ سیاسی ہے۔

سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ صدارتی نظام کے لیے آئین کوئی رہنمائی نہیں کرتا، آئین پاکستان جمہوری نظام حکومت کی بنیاد پر ہے۔ فاضل عدالت نے یہ بھی کہا ہے کہ سپریم کورٹ آئین پاکستان کی رہنمائی کے بغیر کسی کارروائی کا اختیار نہیں رکھتی۔

عدالت کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کے پاس سیاسی نظام بدلنے کا کوئی اختیار نہیں ہے لہذا صدارتی نظام کے نفاذ سے متعلق درخواستیں ناقابل سماعت قرار دی جاتی ہیں۔