ٹریفک وارڈن نے ایف آئی اے کا جعلی افسر پکڑلیا

لاہور : صوبائی دارالحکومت میں ٹریفک وارڈن نے فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی کا جعلی افسر پکڑ لیا۔ تفصیلات کے مطابق صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں ٹریفک وارڈر نے ایف آئی اے کے جعلی افسر کو دھر لیا، وارڈن نے جعلی افسر کو پ نہر اچھرہ سے پکڑا تھا۔

پل نہر اچھرہ پر سیکٹر انچارج شبیر نے دو موٹر سائیکل سواروں کو روکا تو پچھلی سیٹ پر بیٹھے شخص نے اپنی شناخت بطور فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی افسر کرائی۔ وارڈن نے موقع پر ہی تھوڑی تفتیش کی پتہ چلا کہ موصول ایف آئی اے کے جعلی افسر ہیں، جس کے بعد وارڈن کی مدعیت میں سموئیل اور ساگر نامی دونوں موٹر سائیکل سواروں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی ایف آئی اے کے نام پر کارروائیاں کرنے والے متعدد جعلی افسران گرفتار ہوچکے ہیں۔
نومبر 2020 میں فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی کی جانب سے خفیہ اطلاعات اور شکایات پر جعلی ایڈیشنل ڈائریکٹر کے خلاف سائبر کرائم سرکل کے خلاف کارروائی کی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق ملزم عرفان خان سندھ پولیس، ایف آئی اے کا افسر بن کر شہریوں کو بیوقوف بناتا تھا اور دھمکیاں دینے اور پیسوں کی وصولی کے لئے غیر قانونی سرگرمیاں سرانجام دیتا تھا۔ ملزم نے ایف آئی اے کی جعلی آئی ڈی اور دفتر بھی بنا رکھا تھا جبکہ شہریوں کو ڈرانے کے لیے ملزم اپنی اہلیہ کو ایڈیشنل سیشن جج کے طور پر متعارف کرایا کرتا تھا۔