مزدوروں کے لیے بڑی خوشخبری

لاہور: صوبہ پنجاب کے دارالحکومت میں محکمہ محنت کے زیر اہتمام لیبر ٹاور بنایا جائے گا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے انڈسٹریل ورکرز کے لیے ہاسٹلز کے قیام کی تجویز کا جائزہ لینے کی بھی ہدایت کردی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کی زیرصدارت محکمہ محنت کی کارکردگی کا جائزہ اجلاس ہوا۔ اس موقع پر عثمان بزدار نے بتایا کہ محکمہ محنت کے زیر اہتمام لاہور میں لیبر ٹاور بنایا جائے گا۔ اجلاس میں انہوں نے انڈسٹریل ورکرز کے لیے ہاسٹلز کے قیام کی تجویز کا جائزہ لینے کی ہدایت کردی۔

امپلائزسوشل سیکیورٹی انسٹیٹیوشنز اور ورکرزویلفیئرفنڈز اسمارٹ آرگنائزیشن بنانے کا فیصلہ ہوا ہے۔ کامسٹ لاہور میں محکمہ لیبر کی اراضی پر کیمپس قائم کرے گا۔ کیمپس میں30فیصد مزدوروں کے بچوں کو مفت تعلیم دی جائے گی۔ وزیراعلیٰ کا کہنا ہے کہ محکمہ محنت کی2ارب مالیت کی اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرائی، مختلف علاقوں سےمزدوروں کے 144فلیٹ قبضہ مافیا سے واگزار کرائے، پنجاب میں ورکرکی کم ازکم اجرت20ہزار روپے کردی گئی۔

دوران اجلاس انہوں نے کہا کہ حکومت نے اڑھائی سال میں ورکر کی کم ازکم اجرت میں5 ہزار اضافہ کیا۔ عثمان بزدار نے لاہور میں لیبر کے لیے 720فلیٹس پراجیکٹ کو جلدمکمل کرنے کا بھی حکم دے دیا اور کہا چائلڈلیبر کے خاتمے کے لیے پائیدار اقدامات کیے جائیں۔ تونسہ، سرگودھا اور فیصل آباد میں سوشل سیکیورٹی اسپتال بنائے جارہے ہیں۔