پیپلز پارٹی’’ باپ ‘‘ الحاق ، مفاداتی سیاستدانوں کو عوام سزا دیتی ہے ، مصدق ملک

اسلام آباد (روزنیوز رپورٹ)روزنیوز کے پروگرام ’’ سچی بات ‘‘ میں پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما مصدق ملک نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اس سے کوئی غرض نہیں کہ کون سیاست کاروبار کر تاہے لیکن اصل مسئلہ یہ ہے کہ جب آپ بحیثیت سیاست دان کاروبار کر تے ہوں تو آپ کے مفادات اور وزارت کا ٹکراءو نہیں ہونا چاہئے ، ایسا نہیں ہونا چاہئے کہ آپ کی بجلی کمپنیاں ہیں تو آپ کو اس سے متعلقہ وزارت دےدی جائے یا آپ کے کاروبار جو چل رہے ہیں اس سے متعلق آپ کو اختیارات دیدی دیئے جائیں ، آخر یہ کسیے ممکن ہے کہ کوئی شخص ساڑھے تین ارب کا ٹیکا لگا دے ، آپ نے چینی کا سکینڈل ، پیٹرول کا سکینڈل دیکھا، اس میں کون کون ملوث تھے، پھر جب پنجاب میں سبسڈی دی گئی تو وہ محض دو افراد تک محدود رہی ، انہوں نے کہا کہ ایس او پی اور گورننس کے حوالے سے دیکھا جائے تو یہ کہاں کا انصاف ہے کہ جو شخص ادویات کے سکینڈل میں ملوث ہو تو اسے وزار ت سے ہٹا کر پارٹی کا جنرل سیکٹری بنا دیا جائے، ا نہوں نے کہا کہ ہر پارٹی کو اپنی اپنی سیاست کرنا چاہئے ، پیپلز پارٹی نے باپ کے ساتھ الحاق کر دیا ، جب آپ اپنے مفادات کے تحت چلتے ہوں تو پھر عوام آپ کو سزا دیتی ہے ، انہوں نے کہا کہ میں ہمیشہ سے طاہر اشرفی اور ان کی گفتگو کا احترام کرتا ہوں لیکن بات آئینی ہونی چاہئے ، پی ٹی آئی میں کرینیں لگا کر پارلیمنٹ پر حملہ کیا ، طاہر اشرفی میرے بات سے اختلاف کر سکتے ہیں لیکن آئینی بات کرنی چاہئے ، اگر انہیں احتجاج کا حق حاصل ہے تو دیگر کو کیوں نہیں ، ریڈ زون پی ٹی آئی نے دھرنا دیا، پی ٹی آئی والے کرینیں لے کر آئے ، پی ٹی وی پر حملہ کیا، سیکرٹریٹ کو بند کیا، کیا آئین انہیں اس کی اجازت دیتا ہے ، احتجاج کرنا سب کا آئینی حق ہے ، انہوں نے کہا کہ نیب نے شاہد خاقان عباسی کو کال کوٹھری میں بند کیے رکھاتو ہم کیوں نہ اس کے خلاف احتجاج کریں ۔