ہاتھ پاؤں کٹ جانے کے باوجود منگیتر سے شادی کرنے والی بے مثال ثناء

دنیا بھر میں محبت کے لیے وعدے اور قسمیں تو کوئی بھی کھا سکتا ہے لیکن حقیقی اور لازوال محبت وہی ہوتی ہے جو ہر صورت حال کے باوجود نبھائی جائے اور ایسی ہی ایک بے مثال محبت کی مثال قائم کی ہے لاہور کی ایک لڑکی نے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق گزشتہ برس نومبر میں ثناء اور ان کے منگیتر داؤد کی زندگی بھی معمول کے مطابق رواں دواں تھی، دونوں ایک دوسرے کو پسند کرتے تھے اور زندگی بھر ساتھ جینے کے عہد وپیمان باندھ رہے تھے۔

نومبر میں داؤد کے گھر ایک خوفناک حادثہ پیش آیا اور سیڑھیوں سے چھت پر جاتے ہوئے داؤد کے ہاتھوں میں موجود ڈنڈا اوپر بجلی کے تاروں سے ٹکراگیا جس کے بعد ہونے والے دھماکے سے داؤد کا جسم بری طرح جھلس گیا۔ کرنٹ لگنے کے باعث داؤد کا جسم اس قدر شدید متاثر ہوا کہ داؤد کی جان بچانے کے لیے ڈاکٹرز کو ان کے دونوں بازو اور ایک ٹانگ کاٹنا پڑی۔

داؤد کو تین ماہ بعد اسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا تاہم داؤد کی زندگی میں ایک بار پھر خوشی کی کرن اس وقت جاگی جب ان کی منگیتر ثناء اپنے اہل خانہ اور دنیا بھر کے سامنے ان سے شادی کے لیے ڈٹ گئیں۔ ثناء کے گھر والے داؤد کے دونوں بازو اور ایک ٹانگ کٹ جانے کے بعد ثناء کی ان سے شادی کے حق میں نہیں تھے لیکن ثناء نے ہار نہ مانی اور گھر والوں کو چھوڑ کر داؤد سے شادی کر لی۔