نیب حکم کا غلام ہے اور اسے مخالفین کو پکڑنےکا حکم ہے: مریم نواز

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہےکہ نیب حکم کا غلام ہے اور اسے مخالفین کو پکڑنے کا حکم دیا گیا ہے۔ لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ بیانات جانچنے کا اختیار نیب کو کس نے دیا، ہائیکورٹ میں کہا گیا کہ مریم نواز بیانات دے رہی ہیں ان کی ضمانت منسوخ کی جائے، نیب ایک انتقام کا ادارہ ہے، انہوں نے ہائیکورٹ میں جھوٹ بولا کہ میں تحقیقات میں تعاون نہیں کررہی، تین ماہ حراست میں رکھا اس میں کتابوں اور دعوتوں کا پوچھا گیا۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں کو نظر آرہا ہے کہ حکومت کی ٹانگیں کانپ رہی ہیں اور آپ کے ہاتھ پاؤں پھولے ہوئے ہیں، لوگوں کو بے وقوف نہ بنائیں۔ چیئرمین سینیٹ کے الیکشن سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے نام پر مہریں لگی تھیں جس پر کہا گیا کہ 7 ووٹ درست نہیں، امیدوار کے خانے پر مہر لگتی ہے، چاہے امیدوار کے ناک پر لگے ماتھے پر یا چہرے پر لیکن لگی تو امیدوار پر ہے، جب ووٹ دینے والے کے عزائم پکے ہیں تو آپ کو کیا تکلیف ہے، امید ہے یہ معاملہ جب عدالت میں جائے گا تو گیلانی جیت جائیں گے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ نیب کرپشن پکڑنے کا ادارہ نہیں رہا بلکہ عمران خان کے مخالفین کو ہراساں کرنے کا ادارہ ہے کیونکہ عمران خان میدان میں مقابلہ نہیں کرسکتے، وہ میدان میں مقابلہ کریں، ہائیکورٹ اور نیب کے پیچھے چھپنا چھوڑ دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر نیب کرپشن پکڑتی تو آٹا اور چینی چوروں کو پکڑتی، نیب حکم کا غلام ہے، انہیں مخالفین کو پکڑنےکا حکم دیا گیا ہے۔ لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ عمران خان ایک کٹھ پتلی ہے جو 22 کروڑ عوام پر مسلط کیا گیا اور اس کا نتیجہ پورے پاکستان نے دیکھ لیا، وہ عوام کے مجرم ہیں لہٰذا (ن) لیگ اور پی ڈی ایم حکومت کے ساتھ نہیں بیٹھے گی۔

ایک سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ کورونا تب آتا ہے جب حکومت مشکل میں آتی ہے، کورونا اپوزیشن کے جلسوں میں آتا ہے لیکن حکومتی جلسوں میں نہیں آتا، عمران خان کورونا سے بڑا خطرہ ہے، کورونا کی تو ویکسی نیشن ہے اس سے وہ چلا جائے گا مگر عمران خان کی ویکسی نیشن یہی ہےکہ عوام انہیں اٹھاکر باہر پھینکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جب تک حکومت گھر نہیں چلی جاتی اور عمران خان منطقی انجام تک نہیں پہنچتے، کوئی مجھے ٹرے میں رکھ کر بھی پاسپورٹ یا ٹکٹ دے تب بھی پاکستان سے باہر نہیں جاؤں گی۔