چوہدری پرویز الٰہی کیخلاف نیب تحقیقات بند کرنے کا فیصلہ

لاہور: چوہدری پرویز الٰہی کے خلاف غیر قانونی بھرتیوں کی انویسٹی گیشن بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ چوہدری برادران کی چیئرمین نیب کے اختیارات اور نیب انکوائری کے خلاف درخواستوں پر نیب نے لاہور ہائیکورٹ میں جواب جمع کرادیا۔ نیب وکیل کے مطابق چوہدری پرویز الٰہی کے خلاف غیر قانونی بھرتیوں کی انویسٹی گیشن بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جسٹس صداقت علی خان کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سماعت کی، نیب وکیل نے موقف اختیار کیا کہ چوہدری برادران کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کی انویسٹی گیشن حتمی مراحل میں ہے، عدالت نے استفسار کیا کہ درخواست گزاروں کے خلاف کب سے انکوائریاں زیر التوا ہیں، نیب وکیل نے بتایا کہ20 سال سے چوہدری برادران کے خلاف کیسز چل رہے ہیں. لاہور ہائیکورٹ نے آئندہ سماعت پر ڈی جی سلیم شہزاد کو طلب کر لیا، عدالت نے قرار دیا کہ ڈی جی نیب عدالت کو بتائیں کہ 20 سال سے کیوں انکوائری پینڈنگ ہیں، چوہدری شجاعت حسین اور چوہدری پرویز الٰہی نے چیرمین نیب کے اختیارات کے حوالے سے درخواستیں دائر کر رکھی ہیں۔ ہائیکورٹ نے 26 نومبر کو ڈی جی نیب لاہور کو طلب کر لیا۔