ن لیگ نے گلگت بلتستان کے انتخابی نتائج مسترد کر دیے

گلگت: مسلم لیگ ن نے گلگت بلتستان میں ہونے والے اتخابات کے نتائج کو مسترد کر دیا۔

سیکرٹری جنرل مسلم لیگ ن احسن اقبال نے الیکشن نتائج کے خلاف احتجاج کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام کے حقوق پر ڈاکا ڈالا گیا۔ انہوں نے انتخابی نتائج کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ریٹرننگ آفیسر صبح میں حکومتی لوگوں کے پاس حاضری دیتے تھے، الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں کے ساتھ مل کر ایجنڈا بنایا۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ آزاد امیدوار تحریک انصاف کے امیدواروں کے مقابلے میں جیتے، آزاد امیدواروں کی کامیابی کا مطلب یہ ہے کہ عوام نے پی ٹی آئی کو مسترد کر دیا، انتخابات سے تین دن پہلے سے کہا جا رہا تھا کہ مسلم لیگ ن کو 3 سیٹیں ملیں گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس الیکشن میں گلگت بلتستان کے عوام نے مسلم لیگ ن کا خیرمقدم کیا، مسلم لیگ ن نے گلگت بلتستان میں سب سے بڑے جلسے کیے لیکن انتخابات میں ووٹوں پر ڈاکا ڈالا گیا۔

سیکرٹری جنرل مسلم لیگ ن کا کہنا تھا کہ اب کراچی سے پشاور اور گلگت تک احتجاج کیا جائے گا، دھاندلی والے انتخاب سے ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ انہوں نے امید کا اظہار کیا کہ پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتیں شفاف انتخابات کرانے میں کردار ادا کریں گی۔ نیا پاکستان بنانے کے لیے گلگت بلتستان میں امن خراب کرایا جا رہا ہے: حافظ حفیظ الرحمان
سابق وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان اور مسلم لیگ ن کے رہنما حافظ حفیظ الرحمان کا اس موقع پر کہنا تھا کہ کل اندھا دھند فائرنگ کی گئی لیکن کوئی کارروائی عمل میں نہیں آئی، نیا پاکستان بنانے کے لیے گلگت بلتستان میں امن خراب کرایا جا رہا ہے۔

حافظ حفیظ الرحمان نے کہا کہ یہ دوسرا بزدار گلگت بلتستان میں لانا چاہتے ہیں، الیکشن سے ایک دن پہلے 4 وفاقی وزرا لوگوں میں پیسے بانٹ رہے تھے۔