نوکری کی تلاش میں لاہور آنے والی لڑکی زیادتی کا نشانہ بن گئی

ظالم شخص متاثرہ لڑکی کو 2 روز تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا، پولیس نے 2 ملزمان گرفتار کر لیے، مرکزی ملزم تاحال مفرور۔لاہور نوکری کی تلاش میں لاہور آنے والی لڑکی زیادتی کا نشانہ بن گئی، ظالم شخص متاثرہ لڑکی کو 2 روز تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا، پولیس نے 2 ملزمان گرفتار کر لیے، مرکزی ملزم تاحال مفرور۔ تفصیلات کے مطابق لاہور میں ایک اور حوا کی بیٹی کی عزت تار تار کر دیے جانے کا دلخراش واقعہ پیش آیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق افسوسناک واقعہ نارووال کی رہائشی لڑکی کے ساتھ پیش آیا جو لاہور نوکری کے حصول کیلئے آئی تھی۔
متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ رحمان اور طلحہ نامی دو افراد سے نوکری کا جھانسہ دیکر نولکھا میں واقع کوارٹر میں لے گئے، وہاں موجود نعیم نامی شخص کو انٹر ویو دینے کے لئے کہا گیا۔ کوارٹر میں موجود نعیم نامی شخص نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔
ملزم نعیم لڑکی کو 2 روز تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ متاثرہ لڑکی 2 روز بعد کوارٹر سے بھاگ کر تھانے پہنچ گئی۔
لڑکی جانب سے شکایت درج کروائے جانے کے بعد پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کرتے ہوئے 2 ملزموں کو گرفتار کر لیا ہے۔ جبکہ مرکزی ملزم نعیم تاحال مفرور ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نعیم کو بھی جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔ واضح رہے کہ گزشتہ کچھ عرصے کے دوران خواتین کیساتھ زیادتی و قتل کے خوفناک واقعات میں تشویش ناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔ ان واقعات کے بعد عوام کا مطالبہ ہے کہ جنسی زیادتی کے ملزمان کو سخت سے سخت سزائیں دے کر عبرت کا نشان بنایا جائے۔اس حوالے سے وزیراعظم عمران Job خان نے زیادتی مقدمات کیلئے خصوصی عدالتوں کے قیام کی اصولی منظوری دے دی ہے۔ نئی خصوصی عدالتیں بچوں، خواتین اور خواجہ سراؤں کے ساتھ زیادتی کیسز کی سماعت کریں گی۔