مسلم لیگ (ن) نے پارٹی رہنماؤں کو فوج ، متعلقہ ایجنسیوں کے حکام سے ملاقات سے روک دیا

مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف کی جانب سے گزشتہ ہفتےکے بعد پارٹی نے باقاعدہ طورپر ایک ہدایات نامہ جاری کردی جس کے تحت تمام رہنماوں کو مسلح افواج، متعلقہ ایجنسیوں کے حکام سے ملاقات سے روک دیا گیا۔

نوازشریف کی طرف سے یہ ہدایت نامہ سیکریٹری جنرل احسن اقبال نے جاری کیا۔

احسن اقبال نے ہدایت نامہ میں کہا کہ اگر ایسی کوئی ملاقات جو قومی سلامتی یا آئینی ذمہ داریوں کے لیے ضروری ہو توپھر پارٹی قائد کی منظوری سے کی جائے گی۔تحریر جاری ہے‎

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے نواز شریف نے ممبروں کو پارٹی قیادت کی پیشگی اجازت کے بغیر ملکی فوجی قیادت کے ساتھ انفرادی، نجی یا وفد کی سطح پر ملاقاتیں کرنے سے روک دیا تھا۔

سابق وزیراعظم کی جانب سے ہدایات نامہ ایسے وقت پر جاری کیا گیا جب حالیہ دنوں میں فوج کے ترجمان نے انکشاف کیا تھا کہ سابق گورنر سندھ محمد نے دو مرتبہ چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی اور نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی سیاسی اور قانونی پریشانیوں پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

مسلم لیگ (ن) کی جانب سے جاری کردہ سرکلر میں احسن اقبال نے کہا کہ پارٹی پاکستان کی بقا کی جنگ لڑ رہی ہے۔