ریلوے کا سالانہ خسارہ بڑھ کر40 ارب کی سطح پر پہنچ گیا

اسلام آباد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔محکمہ ریلوے کی تین سالہ کارکردگی انتہائی بری رہی، ریلوے کا سالانہ خسارہ بڑھ کر40 ارب کی سطح پر پہنچ گیا ہے،پی ٹی آئی حکومت کے تین سالہ دور میں57 مسافر ٹرینیں بند ہوچکی ہیں جبکہ صرف 85 چل ٹرینیں چل رہی ہیں ، چلنے والی ٹرینوں میں70 نجی شعبے کے اشتراک سے چلانے کیلئے ٹینڈر جاری کیے جاچکے ہیں ، انجنوں کی تعداد 480 سے کم ہو کر 472، مسافر کوچز 460 سے کم ہو کر 380 جبکہ مال گاڑیوں کے ڈبے 2000 سے بھی کم رہ گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ملازمین کی تعداد ایک لاکھ 20 ہزار سے کم ہو کر 72 ہزار رہ گی ہے، پنشنرز کی تعداد ایک لاکھ 15 ہزار سے بھی تجاوز کر گئی ، ریلوے ٹریک، پل اور سگنل سسٹم سمیت دیگر اثاثوں کا 60 فیصد حصہ خستہ حالی کا شکار ہے، ریلوے ٹریک پر 2 ہزار 382 مقامات پر پھاٹک نہیں ہیں، ٹرینوں کے درجنوں حادثات ہوئے، 2019ء میں تیزگام میں آتشزدگی اور جون2021 میں سکھر ڈویژن میں ٹیوں کے حادثے میں 150 سے زائد مسافر زندگی کی بازی ہار گئ