حکومت فنکاروں کے ساتھ ’فنکاری‘ نہ کرے: چودھری شجاعت حسین

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ق کے سربراہ چودھری شجاعت حسین کاکہنا ہے کہ حکومت فنکاروں کے ساتھ فنکاری نہ کرے۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ق کے سربراہ چودھری شجاعت حسین اور سپیکر چودھری پرویزالٰہی سے پنجاب آرٹسٹ پروڈیوسر پنجاب تھیٹر ایسوسی ایشن کے وفد نے چیئرمین قیصر ثناء اللہ کی سربراہی میں ملاقات کی۔ وفد میں افتخار ٹھاکر، قیصر پیا، آصف اقبال، طاہر انجم، شاہد خان اور محمد یوسف شامل تھے۔

ملاقات کے دوران چودھری شجاعت نے کہا کہ حکومت فنکاروں سے محبت کرے ان کے ساتھ ”فنکاری“ نہ کرے۔ ان فنکاروں کے ساتھ گلے ملنا چاہتا تھا لیکن کورونا ایک ایسی موذی وبا ہے کہ چاہتے ہوئے بھی نہیں مل سکا۔

لیگی سربراہ کا کہنا تھا کہ عوام دعا اور استغفار کریں تاکہ کورونا کا زور مکمل ٹوٹ جائے۔ عید کے موقع پر ایس او پیز کے مطابق تھیٹر کھول کر عوام میں خوشیاں بانٹنی چاہئیں۔ پنجاب حکومت تھیٹر کھول کر عید الاضحی سے قبل اس وقت کورونا سے جو غمگین ماحول ہے اس کو خوشگوار بنائے۔

ان کا کہنا تھا کہ فنکار برادری ایک ایسا طبقہ ہے جو موجودہ مایوسی اور ڈپریشن سے عوام کو نکال سکتا ہے، اگر فنکار مایوس ہو گئے تو پھر معاشرے کا کوئی پرسان حال نہ ہو گا۔

سپیکر قومی اسمبلی چودھری پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ کورونا سے بچاؤ کیلئے ایس او پیز پرعمل کرنا بہت ضروری ہے، اگر عید پرایس او پیز پر عمل کر کے مخصوص پیمانے پر سٹیج ڈرامہ کیا جا سکتا ہے تو کوئی حرج نہیں، اس صنعت سے وابستہ افراد کا چولہا ٹھنڈا پڑ چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس انڈسٹری کی دوبارہ بحالی کیلئے ایس او پیز کے تحت کام کیا جانا چاہئے، وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کو مل کر فنکار برادری کے مسائل سے آگاہ کروں گا، پانچ ماہ سے تھیٹر کا کاروبار بند ہے۔

اس موقع پر قیصر ثناء اللہ اور افتخار ٹھاکر کا کہنا تھا کہ 8 گھنٹے چلنے والا کاروبار کھلا ہے اور 2 گھنٹے چلنے والا کاروبار بند ہے، اس شعبہ سے 8 لاکھ کے قریب افراد منسلک ہیں، ہم حکومتی ایس او پیز کے تحت کام کرنے کو تیار ہیں، ہمارے مسائل کا مداوا کیا جائے۔