سپریم کورٹ نے پاکستان اسٹیل کی نجکاری کے منصوبےکی تفصیلات طلب کرلیں

سپریم کورٹ نے پاکستان اسٹیل کی نجکاری کے منصوبےکی تفصیلات طلب کرلیں۔ عدالت عظمیٰ نے ملازمین اور ملز انتظامیہ کےدرمیان تصفیے کیلئے ایڈووکیٹ رشید اے رضوی کو ثالث مقرر کردیا۔

ملازمین کی پروموشن کے کیس میں چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ اسٹیل مل کے ساتھ کراچی شپ یارڈ، ہیوی مکینکل کمپلیکس اور پی آئی اے سب بند پڑا ہے، آپ لوگ پاکستان اسٹیل کا سارا سامان بیچ دیں گے اور فارغ ہو کر بیٹھ جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ عدالت نجکاری سے نہیں روک رہی لیکن عدالتی فیصلہ مد نظر رکھیں۔ وفاقی وزیر نجکاری محمد میاں سومرو نے بتایا کہ ستمبر یا اکتوبر میں بولی لگنے کا امکان ہے،ملز کے اثاثوں کی مالیت 100 ملین ڈالر ہے۔ وفاقی وزیر اسدعمر نے کہا کہ پاکستان اسٹیل کی ملکیت حکومت کے پاس ہی رہے گی۔