کوروناویکسین: سعودی عرب کے لیے بڑا کارنامہ انجام دینے والی خاتون ڈاکٹر

ریاض: سعودی عرب میں کوروناوائرس کی پہلی ویکسین خاتون ڈاکٹر ایمان المنصور نے تیار کی ہے جنہوں نے اپنی ٹیم کے ساتھ مل کر اس بڑے مشن کو تکمیل تک پہنچایا۔

ایمان المنصور نے ٹیم کی مدد سے اپنے ملک کے لیے پہلی کوروناویکسین تیار کی۔ یہ سعودی ساختہ ویکسین ملکی سطح پر بنائی گئی ہے۔ خاتون ڈاکٹر سعودی عرب میں امام عبدالرحمان بن فیصل یونیورسٹی میں بطور اسسٹنٹ پروفیسر بھی اپنی ذمے داریاں نبھا رہی ہیں۔

اس ویکسین کی تیاری کے دوران جون کے وسط تک ادارہ برائے تحقیق وطبی مشاورت (آئی آر ایم سی) نے ساتھ دیا۔ یہ ادارہ آئی اے یو کے ساتھ منسلک ہے اور وزارت تعلیم اس کی مالی معاونت کرتی ہے۔ ڈاکٹر ایمان المنصور نے پلازمڈ (پی) اور ڈی این اے کے طریقہ کار کے تحت ویکسین تیار کی۔

خاتون ڈاکٹر نے میساچوسٹیس یونیورسٹی سے بائیومیڈیکل انجینئرنگ اینڈ بائیوٹیکنالوجی میں پی ایچ ڈی مکمل کی ہے۔ دنیا میں بننے والی فائزر اور موڈرنا ویکسین میں ایم آر این اے طریقہ کو استعمال کیا گیا ہے جس میں ویکسین کو کم درجہ حرات میں رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے لیکن ایسا پلازمڈ پی اور ڈی این اے طریقہ کار میں نہیں ہوتا۔

اس طرح ویکسین کو ایک جگہ سے دوسری جبکہ منتقلی اور ذخیرہ کرنے میں بھی آسانی پیش آتی ہے۔ڈاکٹر ایمان المنصور کا کہنا تھا کہ سعودی ساختہ ویکسین سے انسانی خلیوں میں طاقت آتی ہے، مدافعتی نظام مضبوط اور مستحکم ہوجاتا ہے۔ مذکورہ ویکسین کے لیے استعمال کے لیے حکومت سے منظوری درکار ہے۔