بھارت میں پھنسے 82 پاکستانیوں کی واپسی کی تیاریاں مکمل

لاہور: بھارتی حکومت نے وہاں پھنسے 82 پاکستانی شہریوں کی 9 جولائی کو واپسی کی اجازت دے دی ہے۔

سفارتی حکام کے مطابق بھارتی وزارت داخلہ نے نئی دہلی میں پاکستانی سفارتخانے کی درخواست پر بھارت میں مقیم پاکستانیوں کی واپسی کی اجازت دے دی ہے۔ مراسلے کے مطابق بھارتی ریاستوں نئی دہلی، مہاراشٹر، گجرات،مدھیہ پردیش،ہریانہ سمیت دیگر شہروں سے 82 پاکستانی شہری 9 جون کی صبح بھارت کے اٹاری بارڈرپہنچ جائیں گے۔ پاکستانی شہریوں کی واپسی کے لیے واہگہ اٹاری سرحد خصوصی طور پر کھولی جائیگی۔ پاکستانی سفارتخانے کی طرف سے اپنے شہریوں کی فہرست بھارتی وزارت داخلہ کو فراہم کی گئی ہے۔ بھارت سے واپس آنے والے پاکستانی شہریوں کا واپس پہنچنے پر کورونا ٹیسٹ ہوگا اور انہیں کورنٹائن میں رکھا جائیگا۔

ممبئی میں مقیم کراچی سے تعلق رکھنے والے پاکستانی شہری نے تصدیق کرتے ہوئے ایکسپریس کوبتایا کہ انہیں حکام کی طرف سے واپسی بارے بتا دیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ ان لوگوں نے 27 مئی کو واپس آنا تھا مگر انہیں واپسی کی اطلاع ایک دن پہلے ملی، اس وقت واپسی بارے پولیس رپورٹ کروانے اور پھر ممبئی سے واہگہ بارڈرتک پہنچنے کا وقت نہیں تھا۔ اس وجہ سے کئی پاکستانی واپس نہیں آسکے تھے۔ تاہم خدا کا شکر ہے کہ اب تقریبا چارماہ بعد ان کی واپسی ہورہی ہے
بھارت میں پھنسے پاکستانیوں میں سے زیادہ ترکا تعلق کراچی اور اندرون سندھ سے ہے اوران میں ہندوبرادری کے لوگ زیادہ ہیں جو مذہبی رسومات کی ادائیگی کے لئے بھارت گئے تھے لیکن کورونا لاک ڈاؤن کی وجہ سے ان کی واپسی نہیں ہوسکی تھی۔ دوسری طرف پاکستان میں مقیم 114 بھارتی شہری 14 جولائی کو واہگہ بارڈر کے راستے واپس جائیں گے۔