وزیراعظم نے پیٹرول بحران میں ملوث کمپنیوں کے خلاف کارروائی کا عندیہ دیدیا

وزیراعظم کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیٹرولیم بحران سے متعلق تحقیقاتی رپورٹ پیش کردی گئی۔وزیراعظم نے پیٹرول بحران میں ملوث کمپنیوں کے خلاف کارروائی کا عندیہ دے دیا اور کہا کہ پیٹرول بحران میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی ہوگی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نےانکوائری رپورٹ کی سفارشات کاجائزہ لینے کیلئے تین رکنی کمیٹی قائم کردی۔کمیٹی میں وفاقی وزیر شفقت محمود، شیریں مزاری اور اسد عمر شامل ہوں گے۔پیٹرول بحران تحقیقاتی کمیشن نے سیکرٹری پیٹرولیم اور ڈی جی آئل کو قصور وار ٹھہرادیا

اسلام آباد میں وزیراعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں پیٹرولیم بحران سے متعلق تحقیقاتی رپورٹ کی سفارشات پربحث کی گئی,پیٹرول بحران رپورٹ پر وفاقی وزراء نے سخت ردعمل دیا اور کہا کہ متعلقہ وزارت نے پیٹرول بحران پرکیا کام کیا؟ بحران آنےکےبعد وزارتوں نے کیا ذمہ داریاں نبھائیں؟

وزراء نے مطالبہ کیا کہ بحران میں ملوث کمپنیوں کے لائسنس منسوخ کیے جائیں، وزیراعظم نے حتمی سفارشات آنے کے بعد سخت کارروائی کا عندیہ دے دیا۔وفاقی کابینہ اجلاس میں 14 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا اور اٹارنی جنرل نے قانونی معاملات پر کابینہ کوبریفنگ دی۔کابینہ نے لیفٹیننٹ جنرل اختر نواز کو چیئرمین نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) تعینات کرنیکی منظوری دے دی۔