وزیراعظم کی کامیاب پالیسیوں کا ایک اور عالمی اعتراف ، 25 نومبر کا دن پاکستان کے نام

اسلام آباد : ورلڈ اکنامک فورم نے وزیر اعظم عمران خان کی کامیاب پالیسیوں کا اعتراف کرتے ہوئے 25 نومبر کو “پاکستان اسٹریٹجی ڈے” منانے کا اعلان کردیا ، وزیر اعظم تقریب کے مہمان خصوصی ہوں گے۔ وزیراعظم عمران خان کی کورونا سے بچاؤکی بہترین حکمت عملی کے باعث پاکستان سب پر سبقت لے گیا اور کورونا کی وبا پر قابو پاکر سب سے کم معاشی نقصان اٹھانے والا ملک بن گیا، کورونا کی پہلی لہر کے دوران پاکستان کو دنیا میں سب سے کم اقتصادی جھٹکا لگا۔

ورلڈ اکنامک فورم نے 25 نومبر کا دن پاکستان کے نام کرتے ہوئے “پاکستان اسٹریٹجی ڈے” منانے کا اعلان کردیا ، وزیر اعظم “پاکستان اسٹریٹجی ڈے”کی تقریب کےمہمان خصوصی ہوں گے۔ ورلڈاکنامک فورم25 نومبر کو پاکستانی قیادت کیلئے دن بھر تقاریب منعقد کرے گا ، جس میں دنیا بھر کے بڑے سرمایہ کار، صنعتکار اور بزنس مین تقاریب میں شریک ہوں گے جبکہ بعض پاکستانی وزرا کو بھی الگ الگ سیشن میں شرکت و اظہار خیال کی دعوت دی گئی ہے۔

وزیراعظم عمران خان صبح 9بجےورلڈ اکنامک فورم سے خطاب کریں گے ، جسمیں وہ کورونا پر قابو پانے کی اسٹریٹیجی کے بارے بریفنگ دیں گے اور معیشت ،انسانی جانوں کو ایک ساتھ کیسے بچایا، ہرنقطے پر بات کریں گے جبکہ تعمیراتی صنعت سمیت 1200 ارب روپے کورونا ریلیف پیکج پر روشنی ڈالیں گے۔ دنیا بھر کے سرمایہ کار اور کمپنیوں کے چیف ایگزیکٹوز بھی سوال وجواب کرسکیں گے ، پاکستانی وزرا بذریعہ ویڈیولنک پالیسیوں اور تجربات ،مشاہدات سےآگاہ کریں گے۔

وفاقی وزیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ معاشی ریلیف پیکجز پر ، اسدعمر نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کی کامیابی پر، معاون خصوصی کلائمٹ چینج ملک امین اسلم گرین اکانومی پر بات کریں گے، کورونا وباکے دوران پسماندہ علاقوں میں 85 ہزار گرین نوکریاں دی گئیں ، ہزاروں غربا درخت لگا کر روزانہ 800روپے تک آمدن حاصل کرتے رہے۔

وفاقی وزیر حماد اظہر صنعتی پیکج، بجلی و گیس بلز میں ریلیف پر بات کریں گے ، 35لاکھ چھوٹے تاجروں، درمیانے صنعتکاروں کو بجلی اور گیس بلز پر سبسڈی دی گئی جبکہ وزیر توانائی عمر ایوب متبادل توانائی کی پالیسی اور ثانیہ نشتراحساس ایمرجنسی پروگرام سےکروڑوں خاندانوں کی مدد پر بات کریں گے، کورونا کی وبا کے دوران فی مستحق خاندان کو12 ہزار روپے دہلیز تک پہنچائے گئے۔