کورونا کی تشویشناک صورتحال، تعلیمی اداروں میں تعطیلات کے حوالے سے آج اہم فیصلہ متوقع

اسلام آباد : کورونا کیسز کے باعث بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس کا اجلاس آج ہو گا ، جس میں تعلیمی اداروں میں موسم سرما کی تعطیلات سمیت اہم فیصلے متوقع ہیں۔

کوروناکیسزکے باعث وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس کا اجلاس این سی اوسی میں جاری ہے ، صوبائی وزرائےتعلیم بذریعہ ویڈیو لنک اجلاس میں شریک ہیں جبکہ این سی اوسی اوروفاقی و صوبائی محکمہ صحت کے حکام بھی موجود ہیں۔

ملک میں بڑھتےکورونا کیسزپر اجلاس قبل ازوقت بلانےکافیصلہ کیاگیا ، اجلاس میں تعلیمی اداروں میں کورونا کیسز اور ایس اوپیزپرعملدرآمد کی صورتحال پر بریفنگ دی جائے گی اور اعلیٰ سطح اجلاس میں موسم سرماکی تعطیلات سےمتعلق مشاورت ہوگی۔ ذرائع کے مطابق موسم سرما کی چھٹیاں جلد اور لمبی کرنے کی تجویزپر تبادلہ خیال ہوگا، وفاقی وزیرتعلیم اجلاس کے بعد اہم فیصلوں کا اعلان کریں گے۔ یاد رہے پانچ طلبہ میں کورونا کی تشخیص کے بعد سندھ زرعی یونیورسٹی ٹنڈوجام کا شعبہ کراپس پروڈکشن ایک ہفتے کیلئے بند کردیا گیا ہے جبکہ کراچی میں اب تک چودہ سرکاری ، سات نجی اسکول اور متعدد کالجز بند کیے جا چکے ہیں جبکہ پنجاب میں 117 اسکولوں میں کرونا کی تصدیق ہوئی ، جس میں سے سولہ سیل کردئیے گئے۔

صوبائی وزیر تعلیم مراد راس کا کہنا تھا کہ اسکول بند کرنے کے حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں ہوا، سوچ سمجھ کر اسمارٹ لاک ڈاون کیے جائیں گے لیکن اگر کرونا نے شدت اختیار کی تو اسکول بند کرنے میں پہل کریں گے۔ اس سے قبل 5 نومبر کو ہونے والے بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس کے اجلاس میں شرکا نے اتفاق کیا تھا موجودہ صورتحال میں تعلیمی ادارےبندکرنےکی ضرورت نہیں، تعلیمی ادارےکھلےرہیں گے تاہم تعلیمی اداروں میں ہرصورت ایس اوپیزپرعملدرآمد کرایا جائے۔

اجلاس میں صوبوں نے موسم سرما کی کم سے کم تعطیلات یا تعطیلات نہ ہونے پر اتفاق کیا اور فیصلہ کیا گیا کہ پنجاب میں موسم سرما کی تعطیلات نہیں ہوں ، موسم سرما کی کم سے کم تعطیلات یا نہ کرنے کا فیصلہ صوبوں پر منحصر ہوگا ۔ خیال رہے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر کی زیر صدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے اجلاس میں موسم سرما کی قبل از وقت تعطیلات کی سفارش کی گئی تھی ، قبل از وقت تعطیلات کی سفارش طلباکی حفاظت، وباکا پھیلاؤ روکنےکے لیے ہے۔