کورونا ریسرچ اور علاج میں سعودی عرب کا اہم کردار

سعودی وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے کہا ہے کہ سعودی عرب کورونا وائرس کے علاج پر ریسرچ اور ای کلینیکل ٹرائلز کے سلسلے میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ دنیا بھر کے ریسرچ اینڈ سٹڈیز سینٹر کے شانہ بشانہ کام کر رہا ہے۔عودی خبررساں ادارے ایس پی اے کے مطابق العبد العالی نے بتایا کہ سعودی عرب نے کورونا پر ریسرچ کے سلسلے میں کافی کام کیا ہے۔ مملکت اس حوالے سے عرب دنیا میں اول اور خطے میں دوسرے نمبر پر ہے۔

العبد العالی نے مزید کہا کہ کورونا کے علاج کے بارے میں سعودی سکالرز کا تحقیقی کام علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر احترام کی نگاہ سے دیکھا جارہا ہے۔ پوری دنیا میں سعودی عرب 25 ویں نمبر پر ہے۔ مشرق وسطی میں دوسرے اور عرب ممالک میں پہلے نمبر پر ہے۔ کورونا کے مریضوں کی تشخیص کا نیا نظام سعودی عرب میں بھی کورونا کے علاج کے لیے ڈیکسا میتھازون کا استعمال

کورونا کے علاج کا دعوی، وزارت صحت کی وضاحت العبد العالی کا کہنا تھا کہ وزارت صحت کورونا وائرس کے حوالے سے اپنا کردار مسلسل ادا کر رہی ہے۔وزارت صحت کے ترجمان نے بتایا کہ کورونا پر ریسرچ مختلف حوالوں سے ہورہی ہے۔ بعض کا تعلق وبائی امراض، دیگر کا کورونا وائرس کو سمجھنے، کچھ کا کورونا کے علاج سے ہے۔ علاوہ ازیں اس وبا پر قابو پانے کے لیے دواؤں اور ویکسین پر بھی تحقیقی کام ہو رہا ہے۔
العبد العالی نے بتایا کہ سعودی عرب نے گزشتہ ہفتوں کے دوران کورونا کے پلازمہ سے علاج کے اہم مطالعے میں حصہ لیا۔ سعودی عرب سارس ون کے علاج میں اس طریقہ کار سے پہلے ہی استفادہ کر چکا تھا۔