کورونا وائرس کی تشخیص کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ ملٹری ہسپتال منتقل

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ میں کورونا وائرس کی تشخیص کے بعد انہیں علاج کے لیے ملٹری ہسپتال منتقل کردیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے اعلان کے لگ بھگ 17 گھنٹے بعد انہیں وائٹ ہاؤس سے باہر نکلتے ہوئےدیکھا جہاں ایک ہیلی کاپٹر امریکی صدر کو ریاست میری لینڈ کے علاقے بیتھسڈا میں واقع والٹر ہیڈ نیشنل ملٹری میڈیکل سینٹر لے جانے کا منتظر تھا۔

وائٹ ہاؤس سے باہر جاتے وقت امریکی صدر نے ماسک اور بزنس سوٹ پہنا ہوا تھا لیکن انہوں نے صحافیوں سے بات چیت نہیں کی۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری ایک مختصر ویڈیو میں کہا کہ میرا خیال ہے کہ میں ٹھیک ہوں لیکن ہم یقینی بنانے جارہے ہیں کہ تمام چیزیں ٹھیک ہوجائیں۔

دوسری جانب وائٹ ہاؤس کے پریس سیکریٹری کیلیگ میکینی نے کہا کہ احتیاطی طور پر آئندہ چند روز کے لیے ڈونلڈ ٹرمپ ہسپتال کے خصوصی سویٹ میں کام کریں گے۔

آن لائن ویڈیوز میں گزشتہ شام والٹر ریڈ کے باہر ٹرمپ کے حامیوں کے ایک چھوٹے گروہ کو دیکھا گیا تھا جو ٹرمپ 2020 کے جھنڈے لہرا رہے تھے، ان میں سے اکثر نے ماسکس نہیں پہنے ہوئے تھے۔

مذکورہ معاملہ سے واقف ذرائع کا کہنا ہے کہ 74 سالہ ڈونلڈ ٹرمپ کو ہلکا بخار ہے۔

علاوہ ازیں وائٹ ہاؤس کے ڈاکٹر سین پی کونلے کا کہنا ہے کہ تجرباتی دوائی کے کاک ٹیل سے ان کا علاج کیا جارہا ہے اور وہ تھکن کا شکار ہیں لیکن ٹھیک ہیں۔

ڈاکٹر سین پی کونلے نے کہا ہے کہ ٹرمپ کو ریجینرن کی ریجن۔کووی2 نامی تجرباتی دوائی جارہی ہے جو کورونا وائرس کے علاج کے کئی تجربوں میں سے ایک ہے جنہیں مونوکلونل اینٹی باڈیز کہا جاتا ہے۔