وبا کی وجہ سے ڈزنی کا 28 ہزار ملازمین کو برطرف کرنے کا فیصلہ

عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث ایڈونچرس تھیم پارک کی مالک اور دنیا کی سب سے بڑی انٹرٹینمنٹ کمپنی کا درجہ رکھنے والی امریکا کی ملٹی نیشنل کمپنی ’ڈزنی‘ نے دنیا بھر میں اپنے تمام پارکس بند کردیے تھے اور اب کاروبار میں نقصان کے باعث ڈزنی نے اپنے 28 ہزار ملازمین کو ملازمت سے فارغ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

’ڈزنی‘ امریکا کی ملٹی نیشنل کمپنی ہے جو انٹرٹینمنٹ، فیشن، شوبز اور آن لائن کاروبار کی مختلف کمپنیاں اور ادارے چلاتی ہے، اسی کمپنی نے امریکا، ایشیا اور یورپ میں ’ڈزنی لینڈ‘ اور ’ڈزنی تھیم پارک‘ کے نام سے ایڈونچرز سائنس فکشن پارک بھی موجود ہیں۔

ڈزنی کمپنی کے امریکا، ایشیا اور یورپ میں مجموعی طور پر 11 پارک ہیں جن میں سے امریکا اور یورپی ملک فرانس کے دارالحکومت پیرس میں موجود پارک کو فوری طور پر بند کردیا گیا تھا۔

سی این این کی کے مطابق ملازمتوں میں کمی کا کٹوتی کا اثر ڈزنی کے پارکس ، تجربات اور پرڈوکٹس یونٹ پر پڑے گا۔

کمپنی کے مطابق نوکری سے نکالے جانے والوں میں 67 فیصد جز وقتی ورکرز شامل ہوں گے۔

ڈزنی کے دنیا بھر میں 11 پارکس موجود ہیں — فوٹو: اے ایف پی

خیال رہے کہ ڈزنی کے پارکس اور ریزورٹس ڈویژن میں ایک لاکھ سے زائد امریکی ملازمین ہیں۔

عالمی وبا کی وجہ سے دنیا بھر میں ڈزنی کے تھیم پارکس بند ہونے سے کمپنی کو کافی نقصان پہنچا ہے اور 2020 کے ابتدائی 3 ماہ میں منافع میں 91 فیصد کمی دیکھی گئی تھی۔

ڈزنی پارکس کے چیئرمین جوش ڈی امارو نے کہا کہ کاروبار پر کورونا وائرس کے طویل المدتی اثرات کی وجہ سے عملے میں کمی کرنا ضروری ہے۔