کویت کے امیر شیخ صباح الاحمد الصباح انتقال کرگئے

کویت کے صلح جو اور خطے میں مصالحتی کردار ادا کرنے والے 91 سالہ امیر شیخ صباح الاحمد الصباح انتقال کرگئے۔

خبرایجنسی اے پی کی رپورٹ کے مطابق کویت کی سرکاری ٹیلی ویژن پر قرآنی آیات کی تلاوت کے بعد اعلان کیا گیا کہ شیخ صباح الاحمد الصباح انتقال کر گئے ہیں۔

شیخ صباح کی وفات کے بعد ان کے بھائی شیخ نواف الاحمد الصباح متوقع طور پر کویت کے نئے امیر ہوں گے۔

کویت کے انتقال کرجانے والے 91 سالہ امیر شیخ صباح الاحمد نے اپنے ملک کی اعلیٰ سفارت کار کے بعد امیر کی حیثیت سے دہائیوں تک اہم خدمت کی اور 1990 میں خیلجی جنگ کے بعد عراق سے قریبی تعلقات بحال کیے۔

انہوں نے خطے میں دیگر تنازعات کے حل کے لیے بھی اہم کردار ادا کیا اور مصالحتی کوششیں کرتے رہے۔

خلیجی ممالک کے معمر حکمرانوں میں شامل شیخ صباح الاحمد نے قطر اور دیگر عرب ممالک کے درمیان تنازع کے حل کے لیے بڑی کوششیں کیں اور آخری دن تک ان کوششوں کو جاری رکھا۔

کویت کی پارلیمنٹ نے 2006 میں علیل شیخ سعد العبداللہ الصباح کی امارات صرف 9 دن بعد ختم ہونے پر متفقہ طور پر ووٹ کے ذریعے شیخ صباح الاحمد کو حکمران منتخب کیا تھا۔

انہوں نے امریکا کے اہم اتحادی کے طور پر کام جاری رکھا۔

کویت کے امیر کی حیثیت سے انہیں اندرونی سیاسی تنازعات، 2011 میں عرب بہار کے دوران احتجاج اور بدلتی ہوئی تیل کی قیمتوں جیسے مسائل کا سامنا کرنا پڑا۔

تیل کی دولت سے مالا مال کویت کی معیشت کا انحصار تیل پر ہے جو ملکی بجٹ اور سبسڈیز کی فراہمی کے لیے بنیادی محرک ہے۔