افغان جنگ ایک ’اسٹریٹیجک ناکامی‘ تھی، امریکی جنرل مارک ملی کا سینٹ میں اعتراف

(حسنات بلوچ)امریکا کے اعلیٰ ترین فوجی افسر جنرل مارک ملی نے کہا ہے کہ افغانستان میں 20 سالہ جنگ ایک ’اسٹریٹیجک ناکامی‘ تھی۔
امریکی سینیٹ کی آرمڈ سروسز کمیٹی کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا اس کمیٹی کے اراکین نے افغانستان سے امریکی فوج کے انخلا، دوحہ معاہدے کے بعد کی صورت حال، سقوط کابل سمیت افغانستان سے متعلق متعدد امور پر وزیر دفاع لائیڈ آسٹن، جوائنٹ چیفس کے چیئرمین جنرل مارک ملی اور امریکی سنٹرل کمان کے سربراہ جنرل فرینک میک کینزی سے چھ گھنٹے تک سخت سوالات کیے۔
جنرل مارک ملی نے اس موقع پر متنبہ کیا کہ دہشت گرد گروپ منظم ہوکرامریکا پر حملہ کرسکتا ہے۔ امریکی سینٹرل کمانڈ کے کمانڈر جنرل کینیتھ میک کینزی نے کمیٹی کو بتایا کہ انہوں نے ذاتی طور پر سفارش کی تھی کہ 2500 امریکی فوجیوں کو افغانستان کی سرزمین پر موجود رہنا چاہیے۔