ایران جوہری مذاکرات کی بحالی کا خواہاں،ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہ کااقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی خطاب

(حسنات بلوچ)ایران جوہری مذاکرات کی میز پر واپس آنا چاہتا ہے۔
تہران سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق ایران کے ساتھ بین الاقوامی جوہری معاہدے کے معاملے پر مسلسل تاخیر کے شکار مذاکرات بہت جلد دوبارہ شروع ہونے والے ہیں۔ اس سلسلے میں ویانا مذاکرات کے دستاویزات کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہ یان نے نیو یارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر کہی۔
سن 2015 میں ایران کے ساتھ طے کردہ بین الاقوامی معاہدے کے تحت تہران حکومت جوہری ہتھیار کی تياری سے گریز کرے گی۔ اس کے علاوہ یورینیم کی افزودگی کو محدود کرنا اور اپنی جوہری تنصیبات کے باقاعدہ معائنے کی اجازت دینا بھی معاہدے ميں شامل ہے۔
اس معاہدے کے نتیجے میں ایران کے خلاف پابندیوں میں نرمی کی گئی تھی۔