داعش اور ديگر دہشت گرد تنظيموں کو سرحد پر منظم ہو کر خطے کے ديگر ملکوں پر حملے کرنے کا موقع نہيں ديا جائے گا ، ايرانی صدر

(حسنات بلوچ)ایرانی صدر ابراہيم رئيسی نے خبردار کيا ہے کہ ايران کی سرحد پر داعش کو منظم ہونے کا موقع نہيں ديا جائے گا۔ تاجکستان کے دورے کے اختتام پر انہوں نے ايران کے سرکاری ٹيلی وژن پر قوم سے خطاب کيا اور کہا کہ داعش اور ديگر دہشت گرد تنظيموں کو سرحد پر منظم ہو کر خطے کے ديگر ملکوں پر حملے کرنے کا موقع نہيں ديا جائے گا۔ رئيسی کے بقول افغانستان ميں داعش کی موجودگی نہ صرف افغانستان بلکہ پورے خطے کے ليے باعث فکر ہے۔ ايران اور افغانستان کے درميان قريب نو سو کلوميٹر طويل سرحد ہے۔ طالبان کی سابقہ حکومت کو تہران نے تسليم نہيں کيا تھا البتہ اس بار اس کا رويہ نرم دکھائی دے رہا ہے۔