چین کی بڑھتی ہوئی عسکری طاقت پر لگام لگانے کا فیصلہ،امریکا، برطانیہ اور آسٹریلیا کا دفاعی معاہدہ

(حسنات بلوچ)امریکا، برطانیہ اور آسٹریلیا نے ایک خصوصی سکیورٹی معاہدے کا اعلان کیا ہے۔ اس کا مقصد چین کی بڑھتی ہوئی عسکری طاقت پر لگام لگانے کے لیے جدید ترین دفاعی ٹیکنالوجی کی تیاری میں ایک دوسرے کی مدد کرنا ہے۔
امریکا، برطانیہ اور آسٹریلیا کے رہنماؤں نے بدھ کے روز ایک نئے ‘انڈو پیسفک ڈیفنس پارٹنرشپ‘ معاہدے کا اعلان کیا۔ اس سہ فریقی دفاعی اتحاد کے تحت امریکا اور برطانیہ کی جانب سے آسٹریلیا کو جوہری طاقت سے لیس جدید ترین آبدوز ٹیکنالوجی فراہم کی جائے گی۔
یہ پیش رفت ایک ایسے وقت ہوئی ہے جب امریکا اور مغربی ملکوں کے چین کے ساتھ تعلقات میں کشیدگی بڑھتی جارہی ہے۔

اس دفاعی معاہدے کو آوکس (Aukus) کا نام دیاگیا ہے۔ اس کے تحت تینوں ممالک اپنی دفاعی صلاحیتوں بشمول سائبر سکیورٹی، مصنوعی ذہانت اور زیر آب نظام کو بہتر بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا تبادلہ کریں گے۔ تینوں ممالک ہند بحرالکاہل میں چین کی بڑھتی ہوئی طاقت اور فوجی موجودگی سے فکر مند ہیں۔
امریکی صدر جو بائیڈن نے ایک ورچوئل میٹنگ کے دوران کہا، ”آج ہم نے تینوں ملکوں کے درمیان باہمی تعاون کو مزید مستحکم کرنے اور اسے ایک رسمی شکل دینے کے لیے ایک اور تاریخی قدم اٹھایا ہے۔ کیونکہ ہم تینوں یہ سمجھتے ہیں کہ ہند بحرالکاہل میں طویل مدتی امن اور استحکام کے لیے ایسا کرنا ناگزیر ہے۔”