پینٹاگون نے 17 کروڑ سے زیادہ کمپیوٹر ایڈریسز رازداری سے فروخت کر دیے

انٹر نیٹ کی تاریخ کا سب سے بڑا پراسرار واقعہ اس وقت پیش آیا جب ٹرمپ کی رخصتی سے محض چند منٹ قبل کروڑوں کمپیوٹر ایڈریسز رازداری سے فروخت کر دیے گئے۔

پینٹاگون نے بڑی راز داری سے 17 کروڑ سے زائد انٹرنیٹ ایڈریسز ایک مشکوک کمپنی کو فروخت کر دیے، اس مشکوک فرم سے ڈیل سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے وائٹ ہاؤس چھوڑنے سے تھوڑی دیر پہلے کی گئی تھی۔

نجی کمپنی سے کی گئی ڈیل کی مالیت 4 ارب ڈالر سے زائد بنتی ہے، اس ڈیل کو تاریخ کی سب سے بڑی ڈیل قرار دیا جا رہا ہے، پینٹاگون میں انٹرنیٹ ایڈریسز کے معاملات کو ڈیفنس ڈیجیٹل سروس چیف دیکھ رہے تھے، یہ پتے ایک ایسی کمپنی کے سپرد کیے گئے جو گزشتہ سال ستمبر تک موجود ہی نہیں تھی۔

کئی دہائیوں سے انٹرنیٹ کا موجود بے تحاشا ڈیٹا استعمال نہیں کیا جا رہا تھا، تو پینٹاگون نے کروڑوں کمپیوٹر ایڈریسز کا کنٹرول ایک ایسی کمپنی کو دے دیا جسے پہلے کوئی نہیں جانتا تھا، اس کا مقصد یہ تھا کہ ممکنہ سائبر خطرات اور کمزوریوں کو شناخت کیا جا سکے۔

ایک طرف جب 20 جنوری کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ عہدے سے رخصت ہو رہے تھے، اور ساری دنیا اس معاملے کی طرف متوجہ تھی، ایسے میں فلوریڈا کی ایک مبہم کمپنی نے محتاط انداز میں دنیا کے کمپیوٹر نیٹ ورکس کے سلسلے میں یہ اعلان کیا کہ اب وہ ایک بہت بڑے اور کہی دہائیوں سے غیر مستعمل انٹرنیٹ ذخیرے کا انتظام سنبھال رہی ہے جو اس سے قبل امریکی فوج کی ملکیت تھا۔