صدر بائیڈن کا اسلحے پر پابندی سے متعلق بڑا فیصلہ، ری پبلکنز کی تنقید

واشنگٹن : امریکی صدر جوبائیڈن نے گھریلو ساختہ اسلحے کے خلاف صدارتی حکام نامہ جاری کردیا، جس کے تحت محکمہ انصاف کسی بھی قسم کا اسلحے رکھنے والے کے پس منظر کی جانچ کرے گا۔

امریکا میں بڑھتے ہوئے پرتشدد واقعات کی روک تھام کےلیے امریکی صدر نے اسلحے پر پابندی کےلیے بڑا قدم اٹھا لیا، صدر نے کہا کہ امریکا میں فائرنگ کے واقعات بین الاقومی شرمندگی کا باعث بن رہے ہیں۔

صدر بائیڈن کا کہنا تھا کہ فائرنگ کے بڑھتے واقعات وبا کی شکل اختیار کرچکے ہیں جس کی وجہ سے روزانہ 106 افراد فائرنگ کے نتیجے میں جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔

انہوں نے حالیہ فائرنگ کے واقعات میں ہلاک ہونے والے افراد کے اہل خانہ سے اظہار افسوس کرتے ہوئے گھریلو ساخلہ اسلحے کے خلاف صدارتی حکم نامہ جاری کردیا۔

صدارتی حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ محکمہ انصاف کسی بھی قسم کا اسلحہ رکھنے والے کے پس منظر کی جانچ کرے گا۔

صدر بائیڈن کو سینیٹ میں اسلحے کےلیے قانون سازی پر ری پبلکنز کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا، جبکہ نیشنل رائفل ایسوسی ایشن نے صدارتی حکم نامے کو متعصابہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسلحے کے خلاف صدارتی حکم نامے کی رہ سطح پر مخالفت کی جائے گی۔