روس: طیارے کی چکینگ کے دوران انخلا کی ننشستں حدثاتی طور پر ہلنے سے تیں افراد ہلاک

ماسکو: روسی بمبار ہوائی جہاز کے عملے کے تین ارکان فلائٹ سے قبل چیکنگ کے دوران طیارے سے انخلا کی نشستیں حادثاتی طور پر حرکت میں آنے سے ہلاک ہو گئے۔

روسی وزارت دفاع نے بتایا کہ یہ واقعہ ماسکو سے 145 کلومیٹر (90 میل) جنوب مغرب میں کالوگا کے علاقے میں ایک ایئر بیس پر پیش آیا۔

انہوں نے بتایا کہ ایک ٹی یو-22 ایم 3 کی طویل رینج بمبار جہاز کا عملہ ٹریننگ مشن کی تیاری کر رہا تھا جب اس کا طیارے سے انخلا کا نظام خراب ہوگیا اور اس نے حادثاتی طور پر عملے کو اٹھا کر باہر پھینک دیا۔

وزارت دفاع نے کہا کہ پیراشوٹ کھولنے کے لیے اونچائی کافی نہیں تھی اور عملے کے چار ارکان میں سے تین زخمی ہو کر چل بسے۔ ہلاک ہونے والوں میں کالوگا کے قریب شائکوکا ایئربیس پر تعینات بمبار یونٹ کا کمانڈر کرنل وڈیم بیلوسلی ڈسیف بھی شامل ہے۔

روس کی خبروں میں بتایا گیا کہ عملے کا چوتھا رکن اس واقعے میں زندہ بچ گیا تھا اور اسے ہاسپتال میں داخل کرا دیا گیا تھا اور واقعے کی سرکاری تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

ریسکیو سسٹم کا حادثاتی طور پر حرکت میں آجانا بہت کم ہوتا ہے اور کچھ ماہرین کا اندازہ ہے کہ یہ بجلی کی خرابی یا انسانی غلطی کی وجہ سے ہوسکتا ہے۔

ٹی یو 22 ایم 3 ایک سپرسونک ٹوئن انجن لانگ رینج بمبار ہے جو ایٹمی ہتھیار لے جانے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے۔ایک اندازے کے مطابق روسی فضائیہ کے پاس ایسے 60 طیارے موجود ہیں اور کچھ طیاروں نے شام میں عسکریت پسندوں پر حملہ کرنے کے لیے بمباری کے مشن بھی انجام دیے ہیں۔