’اسرائیلی وزیراعظم کی الیکشن مہم کا حصہ نہیں بن سکتے‘، امارات نے سمٹ ملتوی کردی

متحدہ عرب امارات نے اسرائیل اور دیگر عرب ریاستوں کے ساتھ آئندہ ماہ ہونے والی سمٹ کو ملتوی کردیا۔

متحدہ عرب امارات نے اسرائیل اور دیگر عرب ریاستوں کے ساتھ ابوظبی میں طے شدہ سمٹ کو فی الحال ملتوی کردیا ہے اور عرب ممالک کے ایک حکمراں کو اپنی الیکشن مہم کا حصہ بنانے پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

متحدہ عرب امارات کی جانب سے یہ سمٹ آئندہ ماہ اپریل میں رکھی گئی تھی جس میں اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے بھی شرکت کرنا تھی۔

ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النہیان نے ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہےکہ اسرائیلی وزیراعظم متحدہ عرب امارات کے ساتھ تعلقات کی بحالی کو اپنی الیکشن مہم کا حصہ بناکر استعمال کررہے ہیں۔

ابوظبی کے ولی عہد نے اسرائیلی وزیراعظم کے ایک دعوے پر عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے جس میں نیتن یاہو نے ایک عوامی ریلی سے خطاب میں دعویٰ کیا کہ ابو ظبی کے ولی عہد نے انہیں فوری طور پر اسرائیل میں 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی یقین دہانی کرائی تھی۔ْ

متحدہ عرب امارات نیتن یاہو کی الیکشن مہم کا حصہ نہیں بننا چاہتا جس کی وجہ سے اسرائیلی وزیراعظم سے مطالبہ کیا گیا ہےکہ وہ الیکشن تک اپنا دورہ ملتوی کردیں جسے کل طے کیا جانا تھا۔

اماراتی وزیر خارجہ کا کہنا ہےکہ یو اے ای اسرائیل کے کسی بھی انتخابی عمل کا ابھی اور کبھی بھی حصہ نہیں بنے گا۔

نیتن یاہو نے گزشتہ روز ریڈیو پر خطاب میں کہا تھا کہ وہ 23 مارچ کے بعد الیکشن کے خاتمے پر خلیجی ملک کا دورہ کریں گے اور وہ الیکشن سے قبل ابو ظبی نہیں جائیں گے بلکہ الیکشن کے بعد ہی دورہ کریں گے۔

گزشتہ سال اگست سے اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان تعلقات کی بحالی کے بعد سے اب تک اسرائیلی وزیراعظم کئی بار یو اے ای کا دورہ ملتوی کرچکے ہیں۔