ارجنٹینا: مشتعل مظاہرین نے صدر کی گاڑی پر حملہ کردیا

ارجنٹینا میں مشتعل مظاہرین نے صدر البرٹو فرنینڈز کی بس پر حملہ کردیا۔ ارجنٹینا کے جنوبی صوبے کے دورے کے موقع پر ایک کمیونٹی سینٹر کے باہر موجود مشتعل مظاہرین نے صدر کو لانے والی بس کو گھیر لیا اور اس پر پتھراؤ کیا۔

ارجنٹینا کے صدر جنگلات میں لگنے والی آگ کی وجہ سے متاثرہ علاقے کے دورے پر پہنچے تھے، اس حادثے میں ایک شخص ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔

صدر کے دورے کے موقع پر مشتعل مظاہرین نے حکومت کی جانب سے مائننگ کے دوبارہ آغاز کے منصوبے پر صدر کے خلاف شدید احتجاج کیا، مظاہرین نے حکومت کی جانب سے بڑے پیمانے پر منصوبے شروع کرنے کی اجازت دینے پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔

اس موقع پر مظاہرین نے صدر کی گاڑی کو گھیرا، اس پر پتھراؤ کیا اور لاتوں گھونسوں کی بارش کردی جب کہ صدر سے گاڑی سے باہر آنے کا بھی مطالبہ کیا اور گاڑی کو روک لیا، مظاہرین کے لاتوں، گھونسوں اور پتھروں سے بس کی کئی کھڑکیاں ٹوٹ گئیں۔

مظاہرین کے شدید احتجاج کے باوجود صدر کی گاڑی کو وہاں سے نکال لیا گیا۔صدر نے اس واقعے پر رد عمل میں کہا کہ انہیں یقین ہے کہ لوگوں کے ایک چھوٹے سے گروپ نے یہ سب کیا ہے۔