سعودی عرب: بحیرہ احمر سیاحتی منصوبے کا ڈیزائن جاری

ریاض: سعودی عرب میں بحیرہ احمر سیاحتی منصوبے کورل بلوم کا ڈیزائن جاری کردیا گیا، منصوبہ 2030 تک مکمل کرلیا جائے گا۔ سعودی ولی عہد، نائب وزیر اعظم و وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان نے ریڈ سی ڈیولپمنٹ کمپنی کے ماتحت کورل بلوم کے ڈیزائن کا تصور بدھ کی شام جاری کردیا۔شہزادہ محمد بن سلمان ریڈ سی ڈیولپمنٹ کمپنی کی مجلس انتظامیہ کے چیئرمین بھی ہیں۔

ریڈ سی ڈیولپمنٹ کمپنی نے جو پوری دنیا میں منفرد سیاحتی منصوبے پر کام کر رہی ہے، کورل بلوم کے وہ ڈیزائن پیش کیے ہیں جو برطانوی کمپنی فوسٹر کمپنی نے ڈیزائن کیے ہیں۔یہ ڈیزائن بحیرہ احمر کے سب سے بڑے جزیرے کے نوخیز قدرتی ماحول کے تناظر میں بنائے گئے ہیں۔ریڈ سی کمپنی کے چیئرمین جان بیگانو نے کہا کہ جزیرہ شریرۃ بحیرہ احمر پروجیکٹ کا صدر دروازہ ہے، اسی لیے اس کے ڈیزائن انوکھے اور لازوال قسم کے بنائے جانے ضروری تھے۔

انہوں نے کہا کہ ڈیزائن صرف سعودی عرب کی ہی سطح پر نہیں بلکہ دنیا کی سطح پر بھی منفرد ہیں اور یہ ماحولیاتی تحفظ کی علامت ہیں، نیز ترقیاتی عمل میں نئی سوچ اور نیا طرز متعارف کروائیں گے۔

شریرۃ جزیرے کے ڈیزائن کا تصور حیاتی تنوع کو مدنظر رکھ کر بنایا گیا ہے، اس کے تحت مینگروو درختوں کا تحفظ ہوگا اور قدرتی ماحول کی حفاظت کے لیے سمندری حیاتیات کو جوں کا توں برقرار رکھا جائے گا، علاوہ ازیں جزیرے کی جمالیاتی شکل کو مزید بہتر بنانے کے لیے اسپیشل پارک بھی بنائے جائیں گے۔

جزیرے میں 11 ہوٹل اور ریزروٹس تعمیر ہوں گے، انہیں کووڈ 19 وبا کے بعد سیاحوں کی امنگوں کے عین مطابق ڈیزائن کیا گیا ہے علاوہ ازیں یہاں بڑے بڑے میدان بھی ہوں گے۔ڈیزائن کے مطابق ڈولفن نما جزیرے پر نئے ساحل بنائے جائیں گے اور نئی جھیل بھی تیار کی جائے گی، جس سے جزیرے کا ماحول بہت عمدہ ہوجائے گا۔

سطح سمندر بلند ہونے کی صورت میں طوفان کے خطرات سے تحفظ بھی حاصل رہے گا۔ سب سے اچھی بات یہ ہے کہ یہاں جو تبدیلیاں ہوں گی وہ جزیرے کے نقوش کو برقرار رکھیں گی اور ان سے جزیرے کا قدرتی ماحول کسی بھی شکل میں متاثر نہیں ہوگا۔ہوٹلوں اور ریزروٹس کی تعمیر میں ایسے عمارتی عناصر استعمال کیے جائیں گے جن سے بجلی کا استعمال کم سے کم ہو اور ان سے ماحول متاثر نہ ہو۔

ریڈ سی ڈیولپمنٹ کمپنی سنہ 2024 تک 30 فیصد کام مکمل کرلے گی، یہاں دنیا بھر میں بیٹریاں چارج کرنے کا دنیا کا سب سے بڑا سسٹم قائم کیا جائے گا، اس کی بدولت پروجیکٹ کے ایک ایک حصے کے لیے تجدید پذیر توانائی میسر ہوگی۔ریڈ سی پروجیکٹ منصوبہ سنہ 2030 میں مکمل ہوگا، یہ 50 ہوٹلوں اور ریزروٹس پر مشتمل ہوگا جن میں 8 ہزار کمرے ہوں گے۔ 13 سو رہائشی عمارتیں 22 جزیروں میں تعمیر ہوں گے جبکہ گالف کلب سمیت متعدد تفریحی مراکز بھی قائم کیے جائیں گے۔