سعودی عرب میں تاریخ کا مہنگا ترین اُونٹ 8 ارب روپے میں فروخت ہو گیا

سعودی عرب میں اونٹوں کو بہت مقام حاصل ہے۔ اونٹ ریس دُنیا بھر میں مقبول ہے۔ سعودی لوگ بہت شوق سے اونٹوں کو پالتے ہیں۔ بلکہ انہیں اپنے گھر کے فرد کی طرح لاڈ پیار سے رکھتے ہیں۔ سعودیہ میں ایک اونٹ اتنا زیادہ مہنگا بیچا گیا ہے کہ جس کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ ’عرنون‘ کو گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز میں دنیا کا مہنگا ترین اونٹ کے طور پر درج کیا گیا ہے جسے 220 کروڑ ریال میں فروخت کیا گیا جو پاکستانی کرنسی میں 8 ارب روپے بنتے ہیں۔

اس کی ایک ویڈیو بھی جاری کی گئی ہے۔کنگ عبدالعزیز فیسٹول کے تیسرے ایڈیشن میں اس کی پہلی پوزیشن آئی ہے۔عرنون سعودی عرب میں اونٹ کے باڑوں میں سے ایک میں موجود ہے۔اس کے مالک نے دنیا کے اس مہنگے ترین اونٹ کی کہانی سناتے ہوئے بتایا ہے کہ اس نے یہ اپنے دوست سے خریدا تھا۔ان کے مطابق متعدد مرتبہ اسے 25 ملین ریال تک خریدنے کی پیشکشیں ہوئی جو انہوں نے ٹھکرا دیا تھا۔

اونٹ کے مالک کے مطابق یہ الھدب نامی اونٹوں کی نسل سے ہے، جسے سعودی عرب میں امیر سلطان کا اونٹ کہا جاتا ہے۔ اس کا شمار مغاتیر کے بہترین اونٹوں میں ہوتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اس وقت اس نسل کی 60 ویں پشت چل رہی ہے۔مالک کے مطابق اس کی پیدائش سن 1418 میں ہوئی تھی۔ ’میرے پاس اس نسل کے ا?ٹھ اونٹ موجود ہیں جو بین الاقوامی ریس میں حصہ لینے کے لیے تیار ہیں۔