بھارت: بے روزگار نوجوانوں کو نوکری کا جھانسہ دے کر پیسے بٹورنے والے گرفتار

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں پولیس نے 9 ملزمان کو گرفتار کیا ہے جو بے روزگار افراد کو نوکری دلانے کا جھانسہ دے کر ان سے پیسے بٹور رہے تھے۔ دارالحکومت دہلی میں ایک فرضی کال سینٹر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی پکڑ میں آگیا جہاں معروف کمپنیوں میں ملازمت کا جھانسہ دے کر لوگوں کو لوٹا جارہا تھا۔

کووڈ 19 کی وجہ سے ملازمت کے بحران میں ملزمان نے بہترین ملازمت اور تنخواہ کا لالچ دے کر متعدد افراد کے ساتھ فراڈ کیا۔ ملزمان لوگوں کو ملازمت فراہم کرنے کے نام پر آن لائن پیمنٹ کے ذریعے رجسٹریشن فیس کے طور پر 22 سو روپے وصول کرتے تھے۔دہلی پولیس نے سینٹر پر چھاپہ مار کر 4 خواتین سمیت 9 ملزمان گرفتار کیا، پولیس نے موقع واردات سے 5 لیپ ٹاپ، 5 موبائل فون اور 8 سم کارڈز بھی ضبط کیے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی پوچھ گچھ کے دوران معلوم ہوا کہ ملزمان بے روزگار نوجوانوں کو کال کر کے مختلف کمپنیوں میں ملازمت دینے کا وعدہ کر کے انہیں لالچ دیتے تھے۔رجسٹریشن فیس حاصل کرنے کے بعد مذکورہ نوجوان کو فرضی انٹرویو لیٹر اور اپائنٹمنٹ لیٹر بھیجا جاتا اور اضافی رقم جمع کروانے کو کہا جاتا، فرضی تقرری نامہ بھیجنے سے قبل وہ امیدوار کے بجٹ کے مطابق 10 ہزار سے لے کر 40 ہزار روپے تک کی رقم اس سے وصول کرتے۔

پولیس کے مطابق گرفتار شدہ لوگوں میں سے ایک ملزم آشیش، میرٹھ سے آئی ٹی کی تعلیم حاصل کرچکا ہے، اور لاک ڈاؤن سے قبل ایک بینک میں ملازمت کر رہا تھا۔ دیگر ملزمان کا کوئی تکنیکی تجربہ نہیں۔