امریکا نے سوڈان کو بڑی خوشخبری سنادی

امریکا نے سوڈان کو دہشت گردوں کی معاونت کرنے والےممالک کی بلیک لسٹ سےنکال دیا ہے۔ امریکی وزیرخارجہ نے سوڈان کو فہرست سے نکالنے والی دستاویز پر دستخط کردئیے ہیں، اس پیش رفت کے پیچھے عوامل یہ ہے کہ سوڈان رواں سال اکتوبر میں اسرائیل کو تسلیم کرچکا ہے اور سوڈان نے دہشت گرد ممالک کی فہرست سے نکلنے کے لیے اسرائیل سے معاہدہ کر کے امریکا کو تاوان ادا کیا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے انیس اکتوبر کو اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا تھا کہ سوڈان کو ان ممالک کی بلیک لسٹ سے ہٹا دیا جائے گا جن پر دہشتگردی کی اعانت کرنے کا الزام ہے، کیونکہ سوڈان کی عبوری حکومت نے امریکی متاثرین اور ان کے لواحقین کو تین کروڑ35 لاکھ ڈالر کے ایک معاوضے کے پیکج کی ادائیگی پر اتفاق کیا ہے۔سوڈان نے کروڑوں ڈالر کے جس معاوضے کے پیکج پر اتفاق کیا ہے اس کے تحت سن 1998 میں تنزانیہ اور کینیا میں امریکی سفارت خانوں اور یمن میں سن 2000 میں امریکی بحریہ کے جہاز یو ایس ایس کول پر حملوں جیسے متعدد دہشتگردانہ حملوں کے متاثرین اور ان کے لواحقین کو رقم مہیا کی جائے گی۔

یاد رہے کہ سن 1993 میں امریکا نے سوڈان میں عمر البشیر کی حکومت پر دہشت گرد تنظیموں کی اعانت کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے سوڈان کو بلیک لسٹ کر دیا تھا۔ گزشتہ برس زبردست عوامی مظاہروں کے بعد عمر البشیر کی حکومت کا تختہ پلٹ گیا تھا۔